ان چیزوں کا ذکر جن پر حکومت ٹیکس لگانا بھول گئی ہے

ہمارے ایک قاری جناب محمد اکمل نے بجٹ کے تناظر میں لکھی گئی شہزاد قیس کی یہ غزل ارسال کی جس میں بہت عمدہ تجاویز رکھی گئی ہیں۔ ان کے علاوہ ابھی چند چیزیں ہیں جن کا تذکرہ کرنا شاعر بھول گیا ہے اس پر میں چند دن میں اپنے کالم میں روشنی ڈالوں گا۔ مزید پڑھیں

ہم تقریر کرنے سے کتراتے ہیں(ابن انشا)

لاہور کے سرکلر روڈ پر اردو بازار کے باہر ایک زمانے میں لاہور اکیڈیمی کے نام سے ایک اشاعتی ادارہ تھا جو ابن انشا کی کتب شائع کرتا تھا اور ان کا وارث تھا، یہ ادارہ ان کے بھائی چوہدری سردار محمد صاحب چلاتے تھے، یہ ادارہ بہت بڑی دکان سے سمٹ کر حنا ڈائجسٹ مزید پڑھیں

خوجی (چراغ حسن حسرت)

لیجیے ان سے ملیے ان کا نام خوجی ہے وطن لکھنو پیشہ امیرو ں کی مصاحبت چھوٹے چھوٹے ہاتھ پاؤں چھوٹا سا قد، کالی کالی رنگت گلیور صاحب کے سفر نامے میں آپ نے بونوں کی بستی کا حال پڑھا ہو گا۔ میاں خوجی کو دیکھ کے بے اختیار بونے یاد آ جاتے ہیں۔ خوجی مزید پڑھیں

’ ’مدارس اور اردو‘‘ (ایک نہایت مفید اصافہ)

مرتب: ڈاکٹر فیض قاضی آبادی مبصر: ڈاکٹر رحمت اللہ میر لیکچرر شعبہ اردو، گورنمنٹ ڈگری کالج برائے خواتین بارہ مولہ ہندوستان میں اردو زبان کی تدریس اور اس کی تعمیر و ترقی کے لیے کوشش کرنے والے اداروں میں مدارس اسلامیہ ایسے مراکز ہیں جن کا بنیادی مقصد اگرچہ اردو کا فروغ نہیں ہے مگر مزید پڑھیں

غزل (ڈاکٹر فیاض احمد علیگ)

ڈاکٹر فیاض احمد علیگاسسٹنٹ پروفیسر ابن سینا طبیہ کالج بینا پارہ اعظم گڑھ محبت میں بھلا ایسی نشانی کون دیتا ہےکسی کے واسطے یوں جان جانی کون دیتا ہے مرے اندر کہیں چھپ کر یہ آخر کون بیٹھا ہےمرے نطق و بیاں کو لن ترانی کون دیتا ہے میاں خدمت ہرے پھلدار پیڑوں کی ہی ہوتی مزید پڑھیں

خوابوں کے بند دروازے

معروف ادیب امین بھایانی کا افسانوی مجموعہ ’’ خوابوں کے بند دروازے‘‘ شائع ہوگیا۔ اس تازہ مجموعے میں دس افسانے اور چھ افسانچے شامل ہیں ۔ ’’کتاب والا پبلشر ‘‘اور ’’ فضلی سنز ‘‘کے باہمی اشتراک سے امریکہ میں مقیم معروف ادیب امین بھایانی کا تیسرا افسانوی مجموعہ ’’خوابوں کے بند دروازے‘‘ کے عنوان سے مزید پڑھیں

غزل (ڈاکٹر فیاض احمد علیگ)

ڈاکٹر فیاض احمد علیگاسسٹنٹ پروفیسر ابن سینا طبیہ کالج بینا پارہ اعظم گڑھ جن کو سجدے میں میاں ہم رات بھر دیکھا کئے صبح دم ان کی دعائیں بے اثر دیکھا کئے ۔ توڑ کر سارے قفس ہم آسماں تک آ گئے لوگ بیٹھے آشیاں میں بال و پر دیکھا کئے۔ جب ہمیشہ کے لئے گھر مزید پڑھیں

غزل

ڈاکٹر فیاض احمد علیگ اسسٹنٹ پروفیسر ابن سینا طبیہ کالج بینا پارہ اعظم گڑھ ہندو مسلم ایکتا ہی بس یہاں کی شان ہے ہاتھ میں عبدل کے گیتا رام کے قرآن ہے چار سو تو آدمی کی بھیڑ ہے لیکن میاں اس کا رتبہ اور ہے جو آدمی انسان ہے سب یہی کہتے ہیں مجھ مزید پڑھیں

کرشن چندر کی افسانوی کائنات

دیپک بدکی دیپک کمار بدکی قلمی نام دیپک بدکی، 15 فروری 1950 کو سرینگر میں پیدا ہوئے پوٹنی میں ایم ایس سی کی، افسانہ نگار، پینٹر، کارٹونسٹ ہیں ان کے کام پر جتنے مقالے لکھے گئے ہیں زندہ لوگوں میں شائد ہی کوئی دوسرا صاحب قلم ہو جن کو اس کے مقابلے میں کھڑا کیا مزید پڑھیں

غزل (ڈاکٹر فیاض احمد علیگ)

سارا دکھ سکھ میرے ہمدم اچھا لگتا ہے تم رہتے ہو تو ہر موسم اچھا لگتا ہے مجبوری میں سب غم سہنے پڑتے ہیں ورنہ اس دنیا میں کس کو یہ غم اچھا لگتا ہے گھر داری میں ساری تمثیلیں کھو جاتی ہیں کچھ دن بس یہ جانو ، جانم اچھا لگتا ہے خود ہی مزید پڑھیں

غزل (ڈاکٹر فیاض احمد علیگ)

چند ایک غزلیں ہیں اور کچھ مقالے ہیںمیری میز پر بکھرے اردو کے رسالے ہیں ۔ ہم بھی خوب واقف ہیں یار ڈسنے والے ہیں پھر بھی آستینوں میں ہم نے سانپ پالے ہیں بے تکے سے خوابوں نے نیند چھین رکھی تھینیند کے عوض ہم نے خواب بیچ ڈالے ہیں ۔ دشمنوں کے خیمے میں مزید پڑھیں

رومانوی تحریک

رومانوی تحریک کو عموماً سرسید احمد خان کی علی گڑھ تحریک کا رد عمل قرار دیا جاتا ہے۔ کیونکہ سرسید احمد خان کی تحریک ایک اصلاحی تحریک تھی۔ یہ دور تہذیب الاخلاق کا دور تھا اور تہذیب الاخلاق کی نثر عقلیت، منطقیت، استدلال اور معنویت کی حامل تھی۔ مزید برآں تہذیب الاخلاق کا ادب مذہبی، مزید پڑھیں