زرداری کی مبینہ کمپنی کا فرنٹ مین جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

Spread the love

اسلام آباد (صباح نیوز) اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے

سابق صدر آصف علی زرداری کی مبینہ فرنٹ کمپنی ٹریکام کے گرفتار جنرل

منیجر سلیم فیصل کو 13 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالہ کر دیا۔ دوران

سماعت نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ سلیم فیصل جعلی بینک اکائونٹس

کیس کا اہم ملزم ہے۔ نیب پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ ملزم پر کرپشن کے الزامات

ہیں تفتیش کیلئے جسمانی ریمانڈ دیا جائے۔ سلیم فیصل کی گرفتاری پارک لین

کمپنی کیس میں عمل میں لائی گئی ہے۔ پارک لین کمپنی کی مبینہ فرنٹ کمپنی

پارتھینون پرائیویٹ لیمٹڈ کو جو ڈیڑھ ارب روپے کا قرض دلوایا گیا تھا اس حوالہ

سے جائیدادوں کی قیمت کا جوتخمینہ لگوایا گیا تھا وہ نجی کمپنی ٹریکام سے

لگوایا گیا تھا ۔نیب راولپنڈی نے سلیم فیصل کو اسلام آباد کی احتساب عدالت میں

پیش کیا گیا اور عدالت سے ملزم کے14روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ملزم کو 13 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب

کے حوالہ کر دیا ہے اور نیب حکام کو ہدائت کی ہے کہ ملزم کا جسمانی ریمانڈ

مکمل ہونے پر تفتیش میں ہونے والی پیش رفت کی رپورٹ کے ساتھ دوباہ

عدالت میں پیش کیا جائے۔



Leave a Reply