اب گرفتار سرکاری ملازم کو ہتھکڑی نہیں لگے گی ،جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال

Spread the love

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ،این این آئی) چیئرمین قومی احتساب بیورو ( نیب ) جسٹس

(ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ آئندہ نیب کا ریجنل آفس گریڈ 19 یا اس سے اوپر

کے افسر کو از خود گرفتار نہیں کر ے گا بلکہ اس کیلئے ان سے پیشگی اجازت

لی جائے گی ،کرپشن کے الزام میں گرفتار کسی افسر کو ہتھکڑی بھی نہیں لگائی

جائے گی،بیورو کریسی کا کام ملکی و عوامی مفاد میں پالیسی بنانا ہے، نیب آپ

سب کا ادارہ ہے ایسا قدم نہیں اٹھائے گا جس سے ملکی معیشت کو نقصان ہو۔ ان

خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب سول سیکرٹریٹ کے دربار ہال میں افسران سے

خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر،

ڈی جی نیب شہزاد سلیم سمیت دیگر بھی موجودتھے ۔ اس موقع پر چیئرمین نیب

اور سرکاری افسران کے درمیان کھل کر تبادلہ خیال کیا گیا ۔چیئرمین نیب جاوید

اقبال نے کہاکہ بیورو کریسی ملک کے لئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے ،

بیورو کریسی کا ملکی ترقی میں اہم کردار ہے ۔ اعلیٰ عدلیہ سمیت ملک کے

مختلف اداروں میں اہم ذمہ داریاں سرانجام دی ہیں اس لئے بیور وکریسی کے

مسائل سے آگاہ ہوں ، نیب 1999میں قائم کیا گیا جبکہ میں چیئرمین نیب کی

حیثیت سے گزشتہ 17ما ہ سے کام کررہا ہوں نیب ایک خودمختارادارہ ہے ملکی

ادارے مضبوط ہوں گے تو ملک مضبوط ہوگا۔ انہوںنے کہاکہ پراپیگنڈا کیا گیا کہ

نیب کی وجہ سے بیور وکریسی نے کام کرنا چھوڑ دیا ہے نیب کے ہزاروں

مقدمات کاجائزہ لیا تو بیور و کریسی کے خلاف سامنے آنے والے مقدما ت نہ

ہونے کے برابر تھے یہ مذموم پروپیگنڈہ تھا جس کا مقصد نیب پرا لزام تراشی

اور بیور وکریسی کی حوصلہ شکنی کرنا تھا ۔ انہوںنے کہاکہ نیب قانون کے

مطابق ہرشخص کی عزت نفس کا احترام کرنے کے علاوہ خدشات کو قانون اور

آئین کے مطابق حل کرنے پریقین رکھتا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ نیب آپ کا اپنا اور

انسان دوست ادارہ ہے ،کرپشن کا خاتمہ نہ صرف نیب بلکہ ہم سب کی اجتماعی

ذمہ داری ہے

Please follow and like us:

Leave a Reply