132

اپوزیشن لیڈر شہباز شریف لندن روانہ

Spread the love

30 برس حکومت مگر اپنا علاج اور باہر اور بچوں کی تعلیم و تربیت پر یورپی اداروں پر اعتماد، کیا یہ لوگ اپ کے بچوں کا مستقبل سنوار سکیں گے: لازمی سوچیں

لاہور(جنر ل رپورٹر)اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف لاہور سے براستہ دوحہ لندن چلے گئے، وہ لندن میں اپنے صاحبزادے حمزہ شہباز کی اہلیہ، پوتے اور پوتی کی خیریت دریافت کریں گے۔ شہباز شریف علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئر پورٹ لاہور سے نجی ایئر لائن کی پرواز کیو آر 621 کے ذریعے لندن روانہ ہوئے، لاہور ائیر پورٹ پر شہریوں نے انکے ساتھ سیلفیاں بنائیں، شہباز شریف نے گذشتہ روز اپنی روانگی کے حوالے سے ٹویٹ بھی کیا تھا جس میں انہوں نے کہا کہ اللہ تعالی نے انکے چھوٹے بیٹے کو فرزند اور بڑے بیٹے کو شادی کے 20 سال بعد بیٹی کی نعمت سے نوازا ہے، نومولود بچی کا لندن میں دل کا بڑا آپریشن ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے بچوں سے ملاقات کے علاوہ اپنا طبی معائنہ بھی کرائیں گے۔

واضح رہے کہ ملک میں مجموعی طور پر 30 برس حکمران رہنے کے باجود بھی کوئی ایسا ہسپتال نہیں بنا سکے جس میں ان کا اپنا علاج اور معائنہ ہو سکے۔ شریف فیملی کے زیر انتظام شریف میڈیکل سٹی اور اتفاق ہسپتال ٹرسٹ چل رہے ہیں مگر خاندان میں کسی کو ان پر اعتماد نہیں ہے دونوں ادارے ہر طرح سے بھرپور پیسہ کما رہے ہیں۔

یہ بھی یاد رہے کہ شریف فیملی نے کبھی پاکستان میں حکومت کے سوا کسی چیز کی خواہش نہیں کی ان کے تمام تر کاروبار باہر ہیں اور ان کے ہر فرد کا علاج لندن میں ہی ہوتا ہے۔ میاں نواز شریف کے بیٹوں نے گذشتہ عرصہ میں موقف اختیار کیا کہ ہم پاکستانی شہری نہیں اس لیے ہم پر پاکستان کے قوانین کا اطلاق نہیں ہوتا اور نہ ہی ہم پاکستانی اداروں کو جواب دہ ہیں۔

شریف فیملی سمیت اکثر سیاسی خاندانوں کا واحد مقصد پاکستان میں اپنی اولادوں کے لیے پاکستان میں غلام پیدا کرنا اور بیرونِ ملک جائیدادیں بنانا ہے۔ یہ بات بھی ذہن میں رہے کہ غیر ملکی دانشوروں کے مطابق پاکستان کی حیثیت ایک قبرستان کی ہے یہاں کے لوگ اپنے بچوں کے ساتھ بیرون ملک رہتے، تعلیم حاصل کرتے، کاروبار کرتے ہیں اور آخر میں وصیت کرتے ہیں کہ مرنے کے بعد ان کی تدفین پاکستان میں کی جائے۔ اپنی زندگی میں پاکستانیوں کی اکثریت یہاں آکر رہنا نہیں چاہتی مگر تدفین کے لیے انہیں وطن کی محبت یاد آتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں