عوام تیار ہوجائیں حکمرانوں کو گھربھیجنے کے وقت آگیا ، زرداری

Spread the love

گڑھی خدا بخش (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹرینز کے سربراہ

اور سابق صدر آصف علی زرداری نے حکمرانوں کے خلاف تحریک چلانے کا

اعلان کردیاہے انہوں نے کہا کہ عوام تیار ہوجائیں ،حکمرانوں کو ایوانوں سے

نکالنے اور انہیں گھر بھیجنے کا وقت آ گیا ہے، بہت جلد ان کو گھر بھیجنے کی

تحریک چلائیں گے،ہم سڑکوں پر رہیں گے اور ان کو نکال کر ہی واپس آئینگے ،

اگر موجودہ وزیراعظم عمران خان کو رہنے دیا تو پاکستان کو سو سال پیچھے

دھکیل دے گا، اٹھارویں ترمیم ختم کرنے کے لیے مجھ پر کیسز بنائے جارہے

ہیں،چاہے میں جیل میںر ہوں یا باہر اب ان کو زیادہ وقت نہیں دے سکتے، اگر تم

سے پیسہ اکٹھا نہیں ہورہا تو چھوڑ دو، کوچ کرنے کا وقت آگیا ہے کہ اسلام آباد

جائیں اور حکمرانوں کو نکالیں۔ جمعرات کو گڑھی خدا بخش میں سابق وزیراعظم

اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے بانی ذوالفقار علی بھٹو کی چالیسویں برسی
کے موقع پر بڑے جلسہ عام سے اپنے خطاب میں آصف علی زرداری نے کہا کہ

غریب کیلئے بجلی کا بل دینا بھی مشکل ہو گیا ہے۔ ان کو غریبوں کا احساس ہی

نہیں ہے۔سابق صدر آصف علی زرداری نے کارکنوں سے خطاب میں کہا کہ

بھائیو! تیار ہو جاؤ وقت آ گیا ہے انہیں گھر بھیجنے کا، اس کے علاوہ کوئی

طریقہ نہیں ہے۔ چاہے میں جیل میں ہوں یا باہر اب ان کو زیادہ وقت نہیں دے

سکتے۔ کارکن صبر کریں، بہت جلد ان کو نکالنے کی تحریک چلائیں گے۔آصف

علی زرداری نے اپنا پلان بتاتے ہوئے کہا کہ ہم ان کو ایوانوں سے نکالیں گے۔ ہم

تب تک سڑکوں پر رہیں گے اور ان کو نکال کر ہی واپس آئینگے۔ اگر موجودہ

وزیراعظم کو رہنے دیا تو پاکستان کو سو سال پیچھے دھکیل دے گا۔انہوں نے

موجودہ حکومت کی پالیسیوں اور مہنگائی میں اضافے پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ

غریب کے لیے بجلی کا بل دینا مشکل ہو گیا ہے۔ ان کو غریبوں کا احساس ہی نہیں

ہے۔ ٹماٹر اور پیاز سمیت ہر چیز کی قیمت دگنا ہو چکی ہے۔ سلیکٹڈ وزیراعظم

خود پھٹ پڑا ہے کہ پیسہ اکٹھا نہیں ہو رہا۔ اگر پیسے اکٹھے نہیں ہو رہے تو اقتدار

چھوڑ دو۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ پہلے ہی کہا تھا کہ ہمیں حکومت کی نیت پر

شک ہے۔ اٹھارویں ترامیم کو ختم کرنے کے لیے میرے خلاف کیسز بنائے جا

رہے ہیں۔سابق صدرآصف زرداری نے کہا ہے کہ مجھ پرکیسز بنائے گئے کیونکہ

یہ 18ویں ترمیم ختم کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ بھٹو کو کل

ہی قبر میں اتارا ہے، ان کی سوچ ہر جگہ زندہ اور موجودہے۔پاکستان پیپلز پارٹی

کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج ہم

ذوالفقارعلی بھٹو کی وجہ سے بھارت کی آنکھ میں آنکھ ڈال کر بات کرتے ہیں،جو

تاریخ سے نہیں سیکھتے،انہیں تاریخ سکھاتی ہے، آج شہید بھٹوکے عدالتی قتل کا

چالیسواں سال ہے،آج کا دن ہر ادارے اور منصف سے سوال پوچھ رہا ہے کہ بتاؤ

غریبوں کے محافظ کو قتل کیوں کیا گیا؟ ہمارے قاتلوں کی پناہ گاہوں کوکب تک

تحفظ دیاجاتارہے گا، آج کے دن پاکستان کے محروم طبقات کی امیدوں کا قتل ہوا،

آج کے دن آئین پاکستان کے خالق کا خون ہوا، جو تاریخ سے سبق نہیں سیکھتے

انہیں تاریخ سبق سکھاتی ہے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ 90ہزار قیدیوں کو

باعزت طورپرواپسلانے، پاکستان کو اٹیمی طاقت بنانے والے کی موت کے

پروانے پر دستخط کرنے والے کون تھے، یہ چالیس سال سے پوچھ رہے ہیں۔بلاول

بھٹوزرداری نے کہا کہ سابق صدر نے سپریم کورٹ سے کہا کہ بھٹو کے خون کا

جواب دیا جائے، آج بھی پوچھ رہا ہے کہ انصاف کب ملے گا۔ ہمارے خون کا

مقدمہ ہو تو عدل کی دیوی کونیند کیوں آجاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹوٹے ملک

کوجوڑنے اورقوم کوپاؤں پرکھڑاکرنیوالے کوکیوں قتل کیاگیا،بھٹونے کہا گھاس

کھالیں گے لیکن ایٹمی قوت بنیں گے، بھارت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کربات

بھٹوکی وجہ کی جاتی ہے،کیا بھٹوکوملک کادفاع مضبوط کرنے کی سزا دی گئی؟

کیاوہ غدارتھاجس نے آئین دیایا وہ تھاجس نے توڑا؟ آج کے دن پاکستان کے محروم

طبقے کی امیدوں کاقتل ہوا، آج کے دن عوام کے قائد کوسولی پر لٹکادیاگیا،آج کے

دن آئین پاکستان کے خالق کا خون ہوا،کہ آج کا دن پاکستان کی تاریخ کا وہ دردناک

باب ہے، جس میں مزاحمت کی داستان درج ہے ۔

Please follow and like us:

Leave a Reply