بھارت کو مقبوضہ کشمیرمیں طاقت کے وحشیانہ استعمال کی پالیسی ترک کرناہوگی

Spread the love

معلومات کی جنگ میں آئی ایس پی آر نے بھارت کو شکست دی: بھارتی جنرل کا اعتراف

اگر کسی نے سکھایا کہ اطلاعات کے ساتھ کیسے کھیلنا ہے تو وہ آئی ایس پی آر ہے، سابق لیفٹیننٹ جنرل عطا حسنین

لندن میں برطانوی تھنک ٹینک انسٹیٹیوٹ آف اسٹریٹیجک اسٹڈیز سے خطاب

عطا حسنین کا شمار نامور لوگوں میں ہوتا ہے وہ ناصرف ایک ریٹائرڈ فوجی ہیں بلکہ کشمیر کے معاملات پر بھی گہری نظر رکھتے ہیں۔ انہوں نے کشمیر میں اچھا وقت بسر کیا ہے اور وہ سرینگر کی سنٹرل کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر بھی رہ چکے ہیں۔

لندن(کے پی ا ٓئی )بھارت کے سابق جنرل کا کہنا ہے کہ ہائبرڈ وار میں پاک فوج نے بھارت کو پچھاڑ کر رکھ دیا ہے۔بھارت کے سابق لیفٹیننٹ جنرل عطا حسنین نے لندن میں برطانوی تھنک ٹینک انسٹیٹیوٹ آف اسٹریٹیجک اسٹڈیز سے خطاب میں اعتراف کیا کہ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے ہمیں سکھایا معلومات کی فراہمی کیا ہوتی ہے۔

بھارتی سابق کور کمانڈر شمالی کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل (ر) عطا حسنین کا کہنا تھا کہ بھارت کو اطلاعات کے شعبے میں آئی ایس پی آر نے پچھاڑ دیا اور پاکستان اطلاعات کی جنگ پورے طریقے سے جیت چکا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر کسی نے سکھایا کہ اطلاعات کے ساتھ کیسے کھیلنا ہے تو وہ آئی ایس پی آر ہے، آئی ایس پی آر نے کمال حکمت عملی سے نہ صرف کشمیریوں کو بھارتی فوج سے متنفر کیا بلکہ بھارتی قوم کو بھی بھارتی فوج سے دور کردیا۔

ان کا کہنا ہے کہ کشمیر میں اٹھتے جنازے، عسکریت پسندی کے عروج کی وجہ ہیں اور آزادی پورے کشمیر میں گونج رہی ہے، طاقت کا استعمال اس کا حل نہیں۔لیفٹیننٹ جنرل (ر) عطاء حسنین کا کہنا تھا کہ اگر شام، عراق، افغانستان اور پاکستان میں دھماکے ہو سکتے ہیں تو کشمیر میں پلوامہ واقعہ کا بھی قوی امکان تھا۔

انہوں نے کہا کہ روایتی جنگ کا تصور ختم ہو چکا، یہ ہائبرڈ وار کا دور ہے اور ہائبرڈجنگ میں میڈیا بڑا ہتھیار ہوتا ہے۔ سابق جنرل کے مطابق روایتی جنگ سے فتح نہیں ملتی اور امریکہ نے سیکھنے میں 18 سال لگائے، دنیا میں دہشت گردی کی لہر ہے لیکن لوگ ہائبرڈ وار سے واقف نہیں، پاکستان نے معلومات میں انتہائی پیشہ وارانہ مہارت دکھائی اور بھارت کو اس میدان میں پیچھے چھوڑ دیا، سابق بھارتی جنرل مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج کی پندرہویں کورکے جنرل آفیسر کمانڈنگ کے طور پر بھی خدمات انجام دے چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئی ایس پی آر نے بھارتی فوج اور کشمیریوں کے درمیان بڑھتی ہوئی اجنبیت اور خلیج کو یقینی بنانے میں شاندار کردار ادا کیا۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیرمیں پلوامہ حملے کاذمہ داربھارتیہ جنتاپارٹی کی حکومت کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ اس حقیقت سے آگاہ تھے کہ بھارتی حکومت میں تنازعات کے حل کی سمجھ بوجھ کے فقدان کے باعث پلوامہ حملے جیسا واقعہ رونما ہوسکتاہے۔

ریٹائرڈلیفٹیننٹ جنرل عطا حسنین نے کہا کہ بھارتی فوج نے گذشتہ تیس سال میں کئی تذویراتی غلطیاں کی ہیں لیکن فوجی کارروائیوں کو نفسیاتی جنگ کے طورپراستعمال کرنا اُس کی فاش غلطی تھی۔ تنازعہ کشمیر کے حوالے سے سابق بھارتی فوجی جنرل نے کہاکہ یہ مسئلہ طاقت کے استعمال سے حل نہیں کیا جاسکتا اور بھارت کو بالآخر مقبوضہ کشمیر میں طاقت کے وحشیانہ استعمال کی پالیسی ترک کرنا ہوگی۔

Please follow and like us:

Leave a Reply