بھارتی ’’ٹیسٹ مشن شکتی ‘‘ پر امریکہ کا اظہار تشویش، خلا میں آلودگی پھیلانے پر انتباہ

Spread the love

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ نے کہا ہے بھارت نے سیٹلائٹ شکن میزائل ’’

ٹیسٹ مشن شکتی ‘‘ کو سنجیدگی سے لیا گیا ہے جبکہ ملک سے خلاء میں سیفٹی

و سکیورٹی کیساتھ سٹرٹیجک پارٹنر شپ کیلئے پرعزم ہیں ۔ غیر ملکی خبررساں

ادارے کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان نے صحا فیو ں کیساتھ بات

چیت کرتے ہوئے کہا بھارت کی حالیہ خلائی پیشرفت کو سنجیدگی سے لیا گیا،

بھارت کیساتھ مضبوط سٹرٹیجک پارٹنر شپ کے نا طے ہم خلائی ، سائنسی و

تکنیکی تعاون کیلئے مشترکہ مفادات کا تبادلہ جاری رکھیں گے تاہم خلاء میں

سکیورٹی و سیفٹی کیلئے بھی امریکہ پرعزم رہے گا ۔امریکی حکومت کیلئے

خلائی آلودگی ایک اہم اور باعث تشویش ایشو ہے جبکہ بھارت کے اس بیان کا

بھی نوٹس لیا گیا کہ اس کا یہ تجربہ خلائی آلودگی کے ایشو کو ایڈریس کرنے

کیلئے تھا ۔ امریکہ نے خلا کو گندا کرنے پر بھار ت کو تنبیہ کی ہے جبکہ ناسا

نے بھی خبردار کیا ہے کہ اس تجربے کے خطرناک نتائج برآمد ہو سکتے ہیں۔

امریکہ کی طرف سے نہ صرف تجربے پر تشویش ظاہر کی گئی بلکہ اس کے

نتائج سے خبردار کیا ہے۔ عالمی میڈیا کے مطابق امریکہ کے قائم مقام وزیر دفاع

پیٹرک شیناہن نے بھارت سے کہا ہے وہ خلا کو آلودہ نہ کرے۔ خلا تمام انسانوں

کی مشتر کہ ملکیت ہے جس کو اینٹی میزائل تجربے جیسے اقدامات سے آلودہ

نہیں کیا جانا چا ہئے ۔ انسانوں کا خلا پر انحصار بڑھ رہا ہے اسلئے بین الاقوا می

سطح پر قانون سازی کی ضرورت بڑھ گئی ہے۔دوسری جانب امریکی ائیر سپیس

کمانڈ کے وائس کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ڈیوڈ تھامسن نے ایوا ن نمائندگان کی کمیٹی

کو آگاہ کیا بھارتی تجربے کے نتیجے میں ملبے کے 270ٹکڑ ے وجود میں آئے

ہیں اور ان کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔ نا سا کے سربراہ نے کمیٹی کو بتایا خلائی

ملبہ انتہائی خطرناک ثابت ہو سکتا ہے ۔ ایک دفعہ ملبہ پھیل جائے تو اس کو

سمیٹنا ناممکن ہوتا ہے۔یاد رہے بھا رتی وزیراعظم نریندر مودی نے انتخابی مہم

کے سلسلے میں کئے گئے ایک جلسے کے دوران اسپیس ٹیکنالوجی میں انقلاب

برپا کرنے کا دعوی کیا ہے۔بھارتی وزیراعظم نے خطاب کے دوران کہا کہ

امریکا روس اور چین کے بعد بھارت چوتھا ملک ہے جس نے میزائل کے ذریعے

سٹیلائٹ کو نشانہ بنانے کی صلاحیت حاصل کرلی ہے۔



Leave a Reply