بیوی پر تشدد کے الزام میں گرفتار شوہر چار روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

Spread the love

پولیس نے ہر کام قانون کے مطابق اور فوری طور پر کیا: ترجمان پولیس

لاہور (کرائم رپورٹر) لاہور میں بیوی پر تشدد کے الزام میں گرفتار شوہر کو 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا گیا۔ جمعرات کو خاتون پر تشدد کرنے والے فیصل نامی ملزم اور اس کے ساتھی کو لاہور کی ماڈل ٹائون کچہری میں پیش کیا گیا، عدالت نے خاتون پر تشدد کے الزام میں گرفتار ملزم فیصل اور اس کے ساتھی کو 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا۔ یاد رہے پولیس نے رقص نہ کرنے پر بیوی کو تشدد کا نشانہ بنانے والے ملزم فیصل کو ساتھی سمیت گرفتار کیا۔ لاہور پولیس کے مطابق ملزم کے قبضہ سے استرا، برش اور دیگر سامان بھی برآمد کیا گیا۔ متاثرہ خاتون نے فیصل نامی شخص سے چار سال قبل محبت کی شادی کی تھی۔

خاتون کا کہنا ہے کہ میں نے دوستوں کے سامنے رقص کرنے سے انکار کیا تو شوہر نے ملازمین کے ساتھ مل کر پائپوں سے تشدد کیا اور سر کے بال بھی کاٹ دیئے۔ متاثرہ خاتون نے بتایا کہ جب میں پولیس کے پاس گئی تو میرے پائوں میں جوتی تک نہیں تھی، پولیس اہلکار مجھ سے پیسوں کا تقاضا کرتے رہے، پولیس اہلکاروں نے میڈیکل کروانے کے لیے بھی پیسے مانگے۔

شوہر کے تشدد کا نشانہ بننے والی متاثرہ خاتون نے بتایا کہ اسکی شادی کو4 سال ہوگئے ہیں۔ پسند کی شادی تھی، شوہرنے 6م اہ بعد مارپیٹ شروع کردی، چندروز قبل شوہر نے دوستوں کے سامنے ڈانس کرنے کو کہا، انکارکرنے پرشوہرنے ملازموں کے ہمراہ تشددکانشانہ بنایا۔ خاتون نے بتایا کہ ساتھ دینے والی سہیلی کوبھی شوہر دھمکا رہا ہے ایک روز شوہر نے ساری رات کمرے میں بند کرکے تشددکانشانہ بنایا، شوہر نے بال کاٹ دیئے، وہ نسوانی اعضابھی کاٹنا چاہتا تھا۔

خاتون نے الزام لگایا کہ تھانے پہنچنے پرپولیس نے نا زیباالفاظ استعمال کیے، رشوت طلب کی، پولیس نے کوئی ایف آئی آردرج نہیں کی۔ ساتھ دینے پرپنجاب حکومت کی شکرگزارہوں، حکومت نے امید دلائی عدالتوں سے انصاف ملے گا، چاہتی ہوں شوہر کو سخت سے سخت سزا ملے۔ 5 سے 6 بار پولیس سے رابطہ کرنیکی کوشش کی۔ خاتون نے کہا کہ شوہرکے پولیس سے اچھے تعلقات ہیں۔ وزیراعظم اور حکومت سے اپیل ہے قوانین میں بہتری لائیں۔ ایسا قانون بنایا جائے جہاں عام آدمی کو انصاف مل سکے۔ بے سہاراخواتین کیلئے کام کرنا چاہتی ہوں۔

ایس پی ماڈل ٹائون علی وسیم نے میڈیا سے گفتگو میں کہاتھا کہ 25 مارچ کی شام06 بجے متاثرہ خاتون خود تھانہ کاہنہ آئیں اور اسی روز مقدمہ درج کر لیا گیا تھا۔ ترجمان لاہور پولیس علی وسیم نے بتایا کہ پولیس نے خاتون کی درخواست پر ہر مرحلے پرفوری قانونی ایکشن لیا اور پولیس کی طرف سے بھرپور تعاون کیا گیا۔ ایس ایچ او تھانہ کاہنہ نے معاملہ سننے کے بعد اے ایس آئی طاہر کو ڈی ایچ اے رہبر کے گارڈز کے ہمراہ فوری ریڈ کے لئے بھیجا۔ ایس پی ماڈل ٹائون نے بتایا کہ ڈی ایچ اے انتظامیہ کے مطابق خاتون اور اسکے شوہر کے درمیان جھگڑا آئے روز کا معاملہ ہے۔ ترجمان پولیس نے بتایا کہ معاملہ مزید کارروائی کے لئے انویسٹی گیشن ونگ کے پاس ہے

Leave a Reply