بہاولپور، پروفیسر قتل کیس: تحریک لبیک پاکستان کا اہم رکن گرفتار

Spread the love
مقتول پروفیسر خالد حمید فائل فوٹو

بہاولپور (کرائم رپورٹر)گورنمنٹ ایس ای کالج میں پروفیسر خالد حمید کے قتل کے الزام میں تحریک لبیک پاکستان کے قومی اسمبلی کے کے میدوار کو گرفتارکرلیا گیا۔ پولیس نے بتایا کہ گرفتار ملزم سید ظفر گیلانی کا انسداد دہشت گردی عدالت سے 15 روزہ جسمانی ریمانڈ بھی حاصل کرلیا گیا۔ پروفیسر خالد حمید کے قتل کی تفتیش کے سلسلے میں کہروڑ پکا، رحیم یار خان، ڈی جی خان سمیت مختلف شہروں سے 5 افراد بھی زیر حراست لیے گئے۔

(شعبہ منظم جرائم) آرگنائزڈ کرائم سیل کی جانب سے قتل کے محرکات پر تحقیقات جاری ہیں۔ پولیس کے مطابق زیر تفتیش افراد کو سوشل میڈیا لنکس کے ذریعے ٹریس کیا گیا۔ قاتل طالب علم خطیب حسین کا امیدوار قومی اسمبلی حلقہ این اے 187 ظفر گیلانی سے رابطہ تھا۔ گرفتار ملزم ظفر گیلانی کاتعلق ضلع لیہ سے ہے۔ خطیب حسین پروفیسر کے قتل سے ایک رات قبل وٹس ایپ کے ذریعے ظفر گیلانی سے رابطے میں تھا۔ خطیب حسین کی آخری کال بھی ظفر گیلانی سے ہوئی ہے۔

یاد رہے کہ 20مارچ کو بہاولپور کے گورنمنٹ صادق ایجرٹن کالج میں طالب علم نے چھریوں کے پے درپے وار کرکے اپنے ہی استاد پروفیسر خالد حمید کو قتل کر دیا تھا۔ یہ افسوسناک واقعہ 20مارچ کی صبح اسوقت پیش آیا جب شعبہ انگلش کے پروفیسر خالد حمید اپنے دفتر میں اکیلے بیٹھ کر پیپر چیک کر رہے تھے کہ ان کا شاگرد خطیب حسین آیا بات کرنے کے بہانے کمرے میں آیا اور ان پر چھریوں کے وار کردیئے۔ اس اچانک حملہ میں وہ شدید زخمی ہوگئے اور ہسپتا ل لے جانے سے پہلے ہی جاں بحق ہوگئے۔ پولیس نے ملزم کو جائے واردات سے گرفتار کرکے آلہ قتل برآمد کرلیا اور مقتول کی لاش کو بہاول وکٹوریہ ہسپتا ل منتقل کردیا جہاں پوسٹ مارٹم کے بعد انکی میت انکے لواحقین کے حوالے کردی گئی ۔

Please follow and like us:

Leave a Reply