نقیب اللہ قتل کیس، را ئوانوار سمیت ملزمان پر فرد جرم عائد

Spread the love

ملزمان کا صحت جرم سے انکار ،عدالت نے 11 اپریل کو کیس کے گواہان کو طلب کرلیا

آئندہ سماعت مدعی مقدمہ اور عینی شاہدین کے بیان ریکارڈ کرنے والے مجسٹریٹ بھی طلب

کراچی(کورٹ رپورٹر) انسداد دہشت گردی عدالت نے جعلی پولیس مقابلے میں مارے جانے والے نوجوان نقیب

اللہ کے قتل کیس میں را ئوانوار سمیت دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد کردی۔ پیر کو کراچی کی انسداد دہشت

گردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی جس سلسلے میں کیس میں نامزد مرکزی ملزم سابق

ایس ایس پی رائو انوار اور دیگر ملزمان عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے نقیب اللہ محسود کے قتل کے مقدمے

میں را ئوانوار سمیت دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد کردی تاہم ملزمان نے صحت جرم سے انکار کر دیا جس

پر عدالت نے 11 اپریل کو کیس کے گواہان کو طلب کرلیا۔ جبکہ عدالت نے آئندہ سماعت مدعی مقدمہ اور عینی

شاہدین کے بیان ریکارڈ کرنے والے مجسٹریٹ کو بھی طلب کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: نقیب قتل کیس کا ریکارڈ غائب


واضح رہے کہ اس کیس میں 13 پولیس اہلکار و افسرا ن عدالتی ریمانڈ پر جیل میں ہیں جبکہ را ئوانوار اور

ڈی ایس پی قمر سمیت 5 ملزمان ضمانت پر رہا ہیں، ملزمان پر اغوا قتل سمیت دیگر الزامات ہیں۔ 13 جنوری

کو ملیر کے علاقے شاہ لطیف ٹائون میں سابق ایس ایس پی ملیر را ئو انوار نے نوجوان نقیب اللہ محسود کو

دیگر 3 افراد کے ہمراہ دہشت گرد قرار دے کر مقابلے میں مار دیا تھا۔

Please follow and like us:

Leave a Reply