نوجوان استاد رضوان پنڈت کے قتل کی آزادنہ تحقیقات کرائی جائیں۔

Spread the love

سری نگر(کے پی آئی)کشمیری تاجروں اورسول سوسائٹی گروپ کشمیر سینٹر فار ڈیولپمنٹ اینڈ سوشل اسٹڈیز نے رضوان اسدپنڈت کے قتل کی تحقیقات کے لیے آزادانہ خصوصی کمیشن کے قیام کا مطالبہ کیا ہے۔ جنوبی کشمیر کے اونتی پورہ قصبے سے تعلق رکھنے والے اعلی تعلیم یافتہ نوجوان استاد رضوان اسدپنڈت کو گزشتہ منگل 19 مارچ 2019 کو دوران حراست قتل کر دیا گیا تھا۔

سری نگر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریزکے صدر شیخ عاشق نے کہا کہ رضوان کے جسم پر تشدد کے واضح نشانات موجودتھے۔ میت کو غسل دینے کے دوران انکے بھائی نے تشدد اور جلنے کے نشانات دیکھے ۔ رضوان کو قتل کیا گیا ۔

مقررہ مدت کے دوران رپورٹ تیار کرنے کے لیے آزادانہ خصوصی کمیشن سے تحقیقاتی کرائی جائے اور متاثرین کو انصاف فراہم کیا جائے جب تک کمیشن اپنی رپورٹ پیش کرتا،اس کیس کو حراستی ہلاکت تصور کرتے ہوئے،اس سے منسلک افراد کومعطل کر کے حراست میں لیا جائے۔

واضح رہے کہ کشمیری نوجوان استاد جس جماعت اسلامی کا رکن ہونے کے شبہ پراونتی سے حراست میں لیا گیا تھا اور اس کو دوران حراست تشدد کر کے قتل کر دیا گیا تھا جس پر اس کے بھائیوں نے بتایا کہ غسل کے وقت رضوان کے جسم پر تشدد اور جلنے کے نشانات پائے گئے تھے جبکہ اس کے بازو اور ٹانگ کی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی تھیں۔ اس کے بھائیوں کے مطابق رضوان کی ٹانگوں پر رولا چلائے جانے کے نشانات بھی موجود تھے

Leave a Reply