افغانستان، دہشتگردوں کے ٹھکانے سمجھ کر افغان و اتحادی لڑکا طیاروں نے دو گھروں پر بم گرا دیئے

Spread the love

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز یجنسیاں)افغانستان کے صوبہ قندوز میں فضائی

بمباری میں 2خاندانوں کے 13 افراد اور ہلمند میں سرکاری تقریب کے د و ر ان

دھماکوں میں سربراہ افغان ڈائریکٹوریٹ آف اکانومی نصرت خان سمیت 10افراد

جاں بحق اوردرجنوں زخمی ہوگئے۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق

صوبہ قندوز کے ایک علاقے میں افغان ایئر فورس اور اتحادی افواج نے فضائی

کارروائی کی جس کے نتیجے میں دو عام شہری خاندانوں کے 13 افراد جاں بحق

ہوگئے جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔اہل علاقہ نے جاں بحق افرادکی

میتیں گورنر ہائو س کے سامنے رکھ کر احتجاج کرنے کا اعلان کیا تاہم میتیوں کو

گورنر ہائوس جانے کی اجازت نہ دی گئی۔ دوسری جانب سکیورٹی فورسز فضائی

حملے میں دہشت گردوں کی ہلاکت کے اپنے دعوے پر قائم ہیں۔ادھر صوبہ ہلمند

کے مقامی سٹیڈیم میں ’یوم کسان‘ کی مناسبت سے منعقدہ سرکار ی تقریب میں

یکے بعد دیگرے2 بم دھماکوں میں 10افراد جاں بحق اور 31 زخمی

ہوگئے،زخمیوں میں تقریب کے مہمان خصوصی ہلمند کے گورنر محمد یاسین خان

بھی شامل ہیں جنہیں قریبی ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ان کی حالت خطرے سے

باہر بتائی جا رہی ہے۔پولیس کا کہنا ہے دونوں بم سٹیڈیم کے احاطے میں نصب

کیے گئے تھے جو یکے بعد دیگرے زوردار دھماکے سے پھٹ گئے،زخمیوں میں

کثیر تعداد سکیورٹی اہلکا ر و ں کی ہے۔ افغان وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت

رحیمی نے کہا دھماکے سٹیڈ یم میں بچھائی گئی بارودی سرنگوں کے سبب ہوئے

،دھماکے کی ذمہ داری فی الحال کسی عسکری تنظیم نے قبول نہیں کی۔



Please follow and like us:

Leave a Reply