مودی سرکار کا ایک اور کارنامہ: مسلم خاندانوں پر بی جے پی کے انتہا پسندوں کا تشدد گھروں سے نقدی اور زیورات ساتھ لے گئے۔

Spread the love

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی شہر گڑگاوں میں 20 سے 25 ہندو انتہا پسندوں نے ایک مسلم خاندان کو

تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔بھارتی میڈیا کے مطابق یہ واقعہ گڑگاوں کے علاقے دھماسپور میں پیش آیا جس کے

دوران بھارتی انتہا پسندوں نے ہولی کے دن ایک گھر میں گھس کر وہاں رہنے والوں اور وہاں آئے مہمانوں کو

بری طرح تشدد کا نشانہ بنایا۔تفصیلات کے مطابق متاثرہ گھر کے بچے کرکٹ کھیل رہے تھے کہ کچھ لوگ

وہاں آئے اور کہا کہ پاکستان جاکر کرکٹ کھیلو۔ایف آئی آر کے مطابق واقعہ محمد ساجد کے گھر میں پیش آیا

جو اس مقام پر اپنی اہلیہ ثمینہ اور چھ بچوں کے ساتھ گزشتہ تین سال سے رہائش پذیر ہیں۔ساجد کے بھتیجے

دلشاد کے مطابق موٹر سائیکل پر دو افراد آئے اور کہا کہ یہاں کیا کررہے ہو؟ پاکستان جاکر کھیلو۔دلشاد کے

مطابق انہوں نے جھگڑا شروع کردیا اور جب میرے چچا ساجد نے مداخلت کی کوشش کی تو موٹر سائیکل کے

پیچھے بیٹھے شخص نے انہیں تھپڑ دے مارا ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ دس منٹ بعد دو موٹر سائیکلوں اور کچھ

پیدل افراد ہمارے گھر کی طرف لاٹھیوں، تلواروں اور ڈنڈوں کے ساتھ پہنچ گئے۔ انہیں دیکھ کر ہم اپنے گھر

بھاگ گئے لیکن گھر کا دروازہ توڑ کر اندر گھس آئے اور ہم پر تشدد شروع کردیا۔انتہا پسندوں نے نہ صرف

فیملی کو تشدد کا نشانہ بنایا بلکہ اپنے گھر نقدی اور دیگر قیمتی سامان بھی لے گئے۔

Please follow and like us:

Leave a Reply