مفتی تقی عثمانی پر حملے کا مقدمہ درج۔ دہشت گردی، قتل، اقدام قتل کی دفعات شامل

Spread the love

ڈالمیا، گلستان جوہر اور گلشن اقبال میںکومبنگ آپریشن ۔ گھر گھر تلاشی کے دوران تمام داخلی و خارجی راستوں کو سیل کردیا گیا تھا

کراچی(کرائم رپورٹر) ممتاز عالم دین مفتی تقی عثمانی پر ہونے والے قاتلانہ حملے کا مقدمہ درج کرلیا گیا۔

مقدمہ نمبر 2019/176 سرکار کی مدعیت میں چھ نامعلوم ملزمان کے خلاف درج کیا گیا ہے جس میں دہشت

گردی، قتل اور اقدام قتل کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔شہر قائد کے علاقے نیپا چورنگی سے متصل راشد منہاس

شہید روڈ پر ہونے والے قاتلانہ حملے کے ملزمان کی گرفتاری کے لیے پولیس اور دیگر متعلقہ اداروں نے

ضلع شرقی کے مختلف علاقوں میں کومبنگ آپریشن کیا۔ڈالمیا، گلستان جوہر اور گلشن اقبال میں گھر گھر

تلاشی کے دوران تمام داخلی و خارجی راستوں کو سیل کردیا گیا تھا۔

مفتی تقی عثمانی کون ہیں؟ جاننے کے لیے یہاں کلک کریں

واضح رہے کہ کراچی میں گزشتہ روز

مفتی تقی عثمانی پر قاتلانہ حملے میں ان کا ذاتی محافظ صنوبر خان اور پولیس گارڈ فاروق شہید ہوگئے تھے۔



Please follow and like us:

Leave a Reply