نیوزی لینڈ کی فضا اللہ اکبرکی صدا سے گونج اٹھی

Spread the love

کرائسٹ چرچ(صرف اردو ڈاٹ کام ) نیوزی لینڈ میں دنیا بھرکے مسلمانوں سے

یکجہتی کرتے ہوئے پورے نیوزی لینڈ کے سرکاری ٹی وی اورریڈیو پر براہ

راست اذان نشرکی گئی، ہیگلے پارک میں جمعہ کی اذان کے بعد2منٹ کی

خاموشی اختیارکی گئی، نیوزی لینڈ کی النورمسجد کے پیش امام نے خطبہ جمعہ

میں کہا کہ نیوزی لینڈ کی سوچ نے شیطانی نظریے کے تحت نقصان کی کوشش

ناکام بنادی اورنفرت اورانتہا پسندی کوشکست ہوگئی۔تفصیلات کے مطابق جمعہ

کو دنیا بھرکے مسلمانوں سے یکجہتی کرتے ہوئے پورے نیوزی لینڈ کے

سرکاری ٹی وی اورریڈیو پر براہ راست اذان نشرکی گئی۔ کرائسٹ چرچ کے

ہیگلے پارک میں جمعہ کی اذان کے بعد2منٹ خاموشی اختیارکی گئی۔ نمازجمعہ

کی ادائیگی کے بعد وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن اوردیگروزرا سمیت مختلف مذاہب

کے افراد مسلمانوں سے اظہاریکجہتی کیلئے پارک میں موجود رہے۔نیوزی لینڈ

میں خطبہ جمعہ میں النورمسجد کے پیش امام نے خطبہ دیتے ہوئے کہا کہ سانحہ

کرائسٹ چرچ نیوزی لینڈ کیلئے نئی زندگی ثابت ہوا، انہوں نے کہا کہ ہمارے دل

ٹوٹے ہیں لیکن ہم نہیں ٹوٹے جبکہ نیوزی لینڈ کوتوڑا نہیں جاسکتا، ہم ایک ہیں

اورنیوزی لینڈ کے عوام کا اظہاریکجہتی غیرمعمولی ہے۔پیش امام نے وزیراعظم

نیوزی لینڈ سے اظہاریکجہتی اوراتحاد کا مظاہرہ کرنے پرشکریہ ادا کرتے ہوئے

کہا کہ اسلام دشمنی ایک دن کی بات نہیں، آپ کی قیادت دنیا بھرکیلئے سبق ہے،

کوئی ہمیں تقسیم کرے ہم ایسی اجازت نہیں دیں گے۔وزیراعظم نیوزی لینڈ جیسنڈا

آرڈرن نے ہیگلے پارک میں نمازجمعہ کے بعد حضورپاکؐ کی حدیث مبارک پڑھ

کرسناتے ہوئے خطاب کا آغاز کیا۔ وزیراعظم نیوزی لینڈ جیسنڈا آرڈرن نے کہا کہ

حضورؐ نے فرمایا جو ایمان رکھتے ہیں، ان کی باہمی رحم دلی، ہمدردی

اوراحساس ایک جسم کی مانند ہوتا ہے، اگرجسم کے کسی ایک حصے کو بھی

تکلیف ہوتی ہے تو سارا جسم درد محسوس کرتا ہے۔وزیراعظم نے حدیث پڑھنے

کے بعد مسلمانوں سے یکجہتی کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ نیوزلینڈ آپ کے ساتھ

دکھ میں شریک ہے، ہم سب ایک ہیں۔دوسری جانب کرائسٹ چرچ سانحے میں

شہید ہو نے والے نعیم راشد اورطحہ نعیم کی میتیں ورثا کے حوالے کردی گئیں،

میتوں کو پاکستانی اورنیوزی لینڈ کے قومی پرچموں میں لپیٹا گیا۔ اس موقع پرنعیم

راشد کی والدہ، بیوہ اوربھائی بھی موجود تھے۔دونوں شہدا کی میتوں کو پاکستانی

اورنیوزی لینڈ کے قومی پرچموں میں لپیٹا گیا جبکہ مقامی نوجوانوں کا ہیروکا

کردارادا کرنے والے باپ بیٹے کومنفرد اندازمیں خراج تحسین پیش کیا گیا۔

نوجوانوں نے ماؤری قبائل کا جنگی رقص ’’ ہاکا‘‘ پیش کیا،جس میں نوجوان سینہ

ٹھوک کر پاؤں زمین پر مارتے اور دشمن کو للکارتے ہیں۔بعدازاں دفتر خارجہ کی

جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ نیوزی لینڈ کی مساجد میں دہشت گرد

حملے میں شہید ہونے والے آٹھ پاکستانی شہداء کو کرائسٹ چرچ کے قبرستان میں

سپرد خاک کردیا گیا، نماز جنازہ میں غمزدہ خاندانوں کے افراد نے بھی شرکت

کی۔ دونوں ممالک نے شہداء کے ورثاء کو تمام سفری سہولتیں فراہم کیں۔ شہید

اریب احمد کا جسد خاکی چند روز میں پاکستان لایا جائے گا۔



Leave a Reply