آسیہ کیس، فیصلے کے بعد ہنگاموں سے املاک کا نقصان ,ایک ماہ میں متاثرہ افراد کو ادائیگیاں کر نے کا حکم،چیف جسٹس

Spread the love

چیف جسٹس سپریم کورٹ مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار اور مسٹر جسٹس اعجازالاحسن پر مشتمل بنچ نے وفاقی اور چاروںصوبائی حکومتوں کو آسیہ کیس کے فیصلے کے بعد ہنگاموں سے شہریوں کی املاک کو پہنچنے والے نقصان کے ازالہ کے لئے ایک ماہ میں متاثرین کو ادائیگیوں کا حکم دیتے ہوئے کیس نمٹا دیا۔عدالت نے اس بابت عمل درآمد رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔اس ازخود نوٹس کیس میں محکمہ داخلہ پنجاب، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب اور دیگر حکام عدالت میں پیش ہوئے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ بتایا جائے ادائیگیاں کب اورکیسے ہوں گی؟ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے عدالت کو بتایا کہ ہنگاموں کے دوران نقصانات کا تخمینہ 262ملین لگایا گیا ہے، کابینہ نے اس تخمینے کے مطابق رقم کی منظوری دے دی ہے، جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ ادائیگی کے لئے پلان مرتب کیاہے یا پھریہ کاغذی کارروائی ہے۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ اگر عدالت حکم نہ دیتی تویہ پلان بھی نہ آتا،اڑھائی ماہ گزر گئے لیکن ادائیگی کاپلان نہیں دیاگیا، معصوم لوگوں کی جان و مال کی حفاظت حکومت کی ذمہ داری ہے ،سیکشن افسر محکمہ داخلہ نے کہا کہ اسی ماہ ادائیگیاں کردیں گے، شہریوں کو ادائیگی کا سلسلہ جلد شروع کر دیا جائے گا۔عدالت نے وفاقی اور چاروں صوبائی حکومتوں کو متاثرہ شہریوں کو ایک ماہ میں ادائیگیاں کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس نمٹا دیا۔

Please follow and like us:

Leave a Reply