آسٹریلیا کے خلاف سیریز کے ذریعے نوجوان کھلاڑی ورلڈ کپ اسکواڈ میں جگہ بنا سکتے ہیں، مکی آرتھر

Spread the love

مکی آرتھر نے کپتان سرفراز احمد سمیت دیگر کھلاڑیوں کو سیریز کے لیے آرام کرانے کے فیصلے کا دفاع

پاکستان ٹیم میں4جگہیں دستیاب ہیں، کھلاڑی اس سیریز کے ذریعے یہ جگہیں اپنے نام کر سکتے ہیں، قومی ہیڈ کوچ

دبئی (سپورٹس ڈیسک)قومی ٹیم کے کوچ مکی آرتھر نے کہا ہے کہ آسٹریلیا کے خلاف ون ڈے سیریز نوجوان کھلاڑیوں کے لیے قومی ٹیم میں مستقل جگہ بنانے کا بہترین موقع ہے اور وہ اس کی بدولت ورلڈ کپ اسکواڈ میں بھی جگہ بنا سکتے ہیں۔پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز کا آغاز ہو گیا ہے اور کپتان سرفراز احمد سمیت چھ اہم کھلاڑیوں کو آرام کا موقع فراہم کیا گیا ہے، دیگر کھلاڑیوں میں حسن علی، بابر اعظم، شاداب خان، شاہین شاہ آفریدی اور فخر زمان شامل ہیں۔

مکی آرتھر نے کہا کہ ہم نے کھلاڑیوں کو آرام دینے کا فیصلہ انتہائی سوچ سمجھ کر کیا اور ہم نے اس سیریز میں بینچ پر موجود کھلاڑیوں کی صلاحیتوں کو جانچنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ ورلڈ کپ سے قبل اپنے فائنل اسکواڈ اور کامبی نیشن کا تعین کر سکیں۔اسکواڈ میں شامل اوپنر شان مسعود اور اب تک پاکستان کی نمائندگی نہ کرنے والے عابد علی ڈومیسٹک کرکٹ میں تواتر کے ساتھ رنز اسکور کر رہے ہیں جبکہ سعد علی نے بھی گزشتہ سیزن میں 900سے زائد رنز بنائے تھے۔فاسٹ بالر محمد عباس ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوا چکے ہیں اور ان سے محدود اوورز کی کرکٹ میں بھی اچھی کارکردگی کی امید ہے جبکہ نوجوان محمد حسنین نے پاکستان سپر لیگ( پی ایس ایل)میں اپنی تیز بالنگ سے ہر خاص و عوام کو اپنا گرویدہ بنا لیا۔اسی طرح پی ایس ایل میں بہتر فٹنس اور فارم کا مظاہرہ کرنے پر عمر اکمل کو بھی اسکواڈ میں طلب کیا گیا ہے۔

آرتھر نے کہا کہ اس سیریز کے بعد ہماری انگلینڈ سے سیریز ہے جس میں ہر کھلاڑی کا کردار پہلے سے طے شدہ ہو گا اور ہمیں پتہ چل چکا ہو گا ہمارا اسکواڈ کس کارکردگی کا حامل ہے، ہم نے ورلڈ کپ کے لیے بہترین اسکواڈ تشکیل دینے کے لیے اپنے جانتے بہترین کوشش کی ہے۔پاکستان کی ٹیم عالمی کپ سے قبل میزبان انگلینڈ کے خلاف پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز کھیلے گی۔قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ نے کہا کہ یہ سیریز نوجوان کھلاڑیوں کے لیے موقع ہے اور یہ بات جاننے کے لیے کسی راکٹ سائنس کی ضرورت نہیں کہ ہمیں ورلڈ کپ کے لیے کچھ پوزیشنز کا تعین کرنا ہے، پاکستان ٹیم میں4جگہیں دستیاب ہیں لہذا یہ کھلاڑی اس سیریز کے ذریعے یہ جگہیں اپنے نام کر سکتے ہیں کیونکہ ہمیں ان پوزیشنز کے لیے کھلاڑی دستیاب نہیں ہیں۔

اس موقع پر آرتھر نے سرفراز سمیت چھ کھلاڑیوں کو آرام کرانے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ سرفراز سمیت دیگر کھلاڑیوں کو آرام کی ضرورت تھی کیونکہ اگر یہ کھلاڑی کھیلتے رہتے تو ان کے انجری کا شکار ہونے کا خطرہ تھا۔انہوں نے کہا کہ انگلینڈ کے خلاف سیریز کے ذریعے یہ کھلاڑی ٹیم میں آ کر عالمی کپ کی بہترین انداز میں تیاری اور اپنی فارم حاصل کر سکیں گے۔

Please follow and like us:

Leave a Reply