دبئی: اشتہاری ملزم پرویز مشرف کی طبیعت خراب ہسپتال منتقل۔ اہل خانہ کی دعا کے لیے اپیل

Spread the love
دبئی کے ہسپتال میں سابق آمر اور اشتہاری مجرم پرویز مشرف پاس ان کی بیٹی اور بیوی بیٹھی ہیں۔

دبئی (مدثر بھٹی سے) پاکستان کے سابق صدر اور آمر پرویز مشرف کی گذشتہ روز اچانگ طبیعت بگڑ گئی جس کی وجہ سے انہیں دبئی کے ایک پرائیویٹ ہسپتال میں داخل کرا دیا گیا ہے۔ خاندانی ذرائع کے مطابق ان کی حالت بہت خراب ہے ان کے اہل خانہ نے پاکستانیوں سمیت تمام مسلم امہ سے ان کی صحت یابی کے لیے دعا کی اپیل کی ہے۔ واضح رہے کہ گذشتہ ماہ بھی سابق صدر کی طبیعت خراب ہونے کے باعث ہسپتال منتقل کرنا پڑا تھا جہان سے انہیں 11 فروری کو گھر بھیج دیا گیا تھا۔

پرویز مشرف پاکستانی عدالتوں کو غداری کیس میں مطلوب ہیں اور پاکستان سے علاج کے بہانے دبئی گئے اور قریب چھ سال سے زائد عرصہ سے دبئی میں مقیم ہیں۔ انہوں نے 12 اکتوبر 1998 کو نواز شریف کی منتخب حکومت کو برطرف کر کے حکومت پر قبضہ کر لیا اور دس سال حکومت کرنے کے بعد جب ان پر آئین معطل کرنے کے جرم میں مقدمات عدالتوں میں پہنچے تو وہ ملک سے فرار ہو گئے ۔ انہوں نے متعدد بار کہا ہے کہ وہ بیوقوف نہیں کہ ملک واپس آکر جیل پہنچ جائیں۔

واضح رہے کہ پرویز مشرف وہ دلیر کمانڈو ہیں جو بہت شد و مد سے خود کو ایک طاقتور انسان بتایا کرتے تھے ان کا مشہور عام جملہ ’’میں کمانڈو ہوں میں ڈرتا ورتا کسی سے ہیں ہوں۔‘‘ دھرا کر لوگ پاکستان میں ان کی دلیری کا مذاق اڑاتے ہیں۔ انہوں نے بہت کوشش کی کہ باہر بیٹھ کر الیکش میں حصہ لے کر کسی طرح اسمبلی میں پہنچ کر اپنے خلاف مقدمات کو ختم کروا دیں۔ سپریم کورٹ کی طرف سے ان کو الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت نہ ملی جس کے بعد انہوں نے اپنی کمانڈری سمیت دبئی میں رہنا ہی عافیت سمجھا۔

Please follow and like us:

Leave a Reply