سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے بے نامی اکاونٹس سے متعلق ٹھوس شواہد حاصل کرلیے

Spread the love

نیب نے پیراگون کے چیف اکاؤنٹس فرحان علی اور بے نامی اکاؤنٹ ہولڈرز کو بھی شامل تفتیش کر لیا گیا ہے۔ نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ فنانشل مانیٹرنگ یونٹ کی رپورٹ کو مدنظر رکھتے ہوئے پیراگون منی ایکسچینج کےخلاف بھی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ نیب لاہور نے پیراگون سٹی کے چیف اکاؤنٹس فرحان علی سمیت متعدد افراد کو طلب کرلیا ہے۔ نیب نے سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے بے نامی اکاونٹس سے متعلق ٹھوس شواہد حاصل کرلیے ہیں۔ نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ خواجہ سعد رفیق پیراگون سٹی کے اکاؤنٹس سے مختلف افراد کو ادائیگیاں کرتے تھے۔ نیب کو موصول دستاويزات کے مطابق پیراگون سٹی کے اکاؤنٹس سے 50 کروڑ روپے کی 200 ٹرانزیکشن ہوئیں اور یہ رقم خواجہ سعد رفیق، خواجہ سلمان رفیق اور ندیم ضیا سمیت فیملی کے 12 اکاونٹس میں منتقل ہوئی۔نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ موصول دستاویزات کے مطابق 5 بینک اکاؤنٹس سے 23 کروڑ 88 لاکھ 45 ہزار روپے نکال کر منتقل کیے گئے۔ نیب نے تفتیش میں قرار دیا ہے کہ خواجہ سعد رفیق نے اپنی وزارت کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اختیارات سے تجاوز کیا۔ خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق نے اربوں روپے مالیت کے کمرشل پلاٹس فروخت کیے جبکہ فروخت کیے گئے پلاٹس پیراگون سٹی کی ملکیت نہیں تھے۔ خواجہ برادران کی جانب سے یہ دھوکے سے فروخت کیے گئے۔

Please follow and like us:

Leave a Reply