259

ظلم کے خلاف کشمیری اخبارات کا انوکھا احتجاج

Spread the love
کشمیری اخبارت نے احتجاً آج صفحہ اول خالی چھوڑ دیا ہے۔

لاہور( تجزیہ نگار صرف اردو ڈاٹ کام) گذشتہ روز بھارت کے 40 سے زائد اخبارات کی تنظیم نے یہ فیصلہ کیا تھا کہ حکومت کی بے جا مداخلت اور بلا وجہ اخبارات کے اشتہارات کی بندش پر احتجاج کرتے ہوئے یہ

اخبارات اپنے صفحہ اول پر نہ تو کوئی تصویر شائع کریں گے اور نہ ہی اس پر کسی قسم کی کوئی خبر شائع

کریں گے۔ کشمیری اخبارات نے آج 10 مارچ 2019 سے اس احتجاج کا آغاز کرتے ہوئے اپنے صفحہ اول کو

خالی چھوڑ دیا ہے، جس سے عالمی سطح پر سوال اٹھنے لگے ہیں، اس سلسلہ میں دنیا کی سینئر صحافتی

قیادت کا کہنا ہے کہ مودی سرکار کو اپنے رویے پر نظر ثانی کرنی چاہیے ایسا نہ ہو کہ 75 فیصد بھارت

پہلے بھوک سے مر رہا ہے اور باقی کا 25 فیصد جن میں خود حکمران شامل ہیں خود کسی قابل نہ رہے، اس

بات کو نظر انداز نہ کیا جائے کہ اگر خلقت خدا نہ رہی تو مودی جیسے قصاب کس پر حکومت کریں گے۔ ایسا

محسوس ہوتا ہے کہ مودی کو اس بات کا یقین ہو چکا ہے کہ وہ کسی بھی طرح اقتدار میں نہیں آسکتا جس وجہ

سے وہ اپنے ہی ملک کی کشتی ڈوبانے پر تیار ہو گیا ہے۔ یہ بات بھی یاد رکھی جائے کہ مودی کی حالیہ

بونگیوں سے کشمیر کے مسئلہ کو جو تقویت ملی ہے یہ اس سے قبل گذشتہ 70 برسوں میں نہیں ملی، ایسا

محسوس ہو رہا ہے کہ کشمیریوں کی آزادی چند ہی قدم پر کھڑی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں