170

کالعدم تنظیموں کے خلاف تاریخی کریک ڈاون

Spread the love

وفاقی دارالحکومت میں مسجد قبا، مدنی مسجد، علی اصغر مسجد، مدرسہ خالد بن ولید اور مدرسہ ضیا القرآن کو تحویل میں لے لیا گیا

اسلام آباد(نمائندہ خصوصی )اسلام آباد انتظامیہ نے کالعدم تنظیموں کے زیرانتظام مساجد ومدارس کا کنٹرول

سنبھال لیا،قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کئی افراد کو حراست میں بھی لیا۔ذرائع کے مطابق اسلام آباد کے

مختلف علاقوں میں واقع مسجد قبا، مدنی مسجد، علی اصغر مسجد، مدرسہ خالد بن ولید اور مدرسہ ضیا القرآن

کو تحویل میں لیتے ہوئے ان کا کنٹرول سنبھال لیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ان مساجد و مدارس کو نیشنل ایکشن

پلان پر عملدرآمد کے سلسلے میں تحویل میں لیا گیا ہے ۔محکمہ اوقاف نے مساجد کے نئے امام اور خطیب

مقرر کردیے۔ مولانا یاسین کو مسجد قبا سے ہٹا کر مولانا عبدالحفیظ کو خطیب مقرر کردیا گیاجبکہ مدنی مسجد

سے مولانا اظہرعباسی کو ہٹاکر مولانا عمرفاروق کو خطیب مقرر کردیا گیااور مسجد علی اصغر سے خطیب

یارمحمد کو ہٹاکر قاری محمد صدیق کو مقرر کردیا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے

متعدد افراد کو بھی حراست میں لیا ہے۔حکومت نے گزشتہ روز اعلان کیا تھا کہ کالعدم جیشِ محمد کے سربراہ

مولانا مسعود اظہر کے بھائی اور بیٹے سمیت کالعدم تنظیموں کے 44 ارکان کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔اس

حوالے سے شہریار آفریدی اور سیکریٹری داخلہ اعظم سلمان نے مشترکہ پریس کانفرنس کی اور بتایا کہ زیر

حراست افرادمیں مسعود اظہر کے بیٹے حماد اظہر اور بھائی مفتی عبدالروف شامل ہیں، مفتی عبدالروف اور

حماد اظہر کے نام بھارت کے ڈوزیئر میں شامل ہیں، جن افراد کو حراست میں لیا گیا ان سے تفتیش کی جائے

گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں