بلوچستان‘ بارشوں سے تباہی، سیلابی ریلے سے 2 ہزار خاندان متاثر

Spread the love

دریائے کیچ میں اونچے درجے کاسیلاب، تربت، قلعہ عبداللہ، ہرنائی اور کوئٹہ کے نشیبی علاقوں میں پانی جمع
میرانی ڈیم میں بھی پانی کی سطح بڑھ گئی جہاں پانی کی سطح 245 فٹ تک بلند ہو گئی ، گندم کی فصل کو نقصان
نوشکی میں نالہ خیصار میں طغیانی سے پانی گھروں میں داخل، ایف سی اور انتظامیہ نے مکینوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کردیا

کوئٹہ(بیورو رپورٹ) بلوچستان کے کئی اضلاع میں بارشوں نے تباہی مچا دی، قلعہ عبداللہ میں 2 ہزار سے

زائد خاندان متاثر ہوئے، تربت کے قریب دریائے کیچ میں اونچے درجے کاسیلاب ہے، پنجاب اور اندرون سندھ

بھی تیز بارش ہوئی۔پنجاب، اندرون سندھ، خیبرپختونخوا اور بلوچستان کے کئی علاقوں میں موسلا دھار بارشیں

ہوئیں۔ تربت، قلعہ عبداللہ، ہرنائی اور کوئٹہ کے نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہو گیا۔ تربت سے سیلابی ریلہ

دریائے کیچ میں داخل ہو گیا، جہاں اونچے درجے کا سیلاب ہے، میرانی ڈیم میں بھی پانی کی سطح بڑھ گئی .

جہاں پانی کی سطح 245 فٹ تک بلند ہو گئی۔ ناصر آباد میں سیلابی پانی داخل ہونے سے ایف سی اور انتظامیہ

نے مکینوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا، نوشکی میں نالہ خیصار میں طغیانی سے پانی گھروں میں داخل

ہو گیا۔ پی ڈی ایم اے کے مطابق قلعہ عبداللہ میں دو ہزار سے زائد خاندان متاثر ہوئے، صوبائی وزیر نے کہا

ہے کہ متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔بارش کے بعد دکی میں گھر کی چھت گر گئی جس کے

نتیجے میں ایک شخص شدید زخمی ہوا جبکہ دو کو بحفاظت ملبے سے نکال لیا گیا۔ خیر پور ناتھن شاہ، ٹھٹھہ

اور ٹنڈو الہ یار میں تیز ہوائوں کے ساتھ بارش ہوئی، ژالہ باری سے گندم کی فصل کو بھی نقصان پہنچا۔

محکمہ موسمیات کے مطابق خیبرپختونخوا، پنجاب، اسلام آباد اور کشمیر کے اکثر مقامات پر تیز ہواں اور گرج

چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے، محکمہ موسمیات نے پہاڑوں پر برفباری کی پیش گوئی بھی کی ہے۔

Please follow and like us:

Leave a Reply