219

بیت المقدس میں یہودی غنڈہ گردی ناقابل قبول ہے ، جامعہ الازھر

Spread the love

قبلہ اول پر دھاوے اور مقدس مقام کی بے حرمتی مذہبی غنڈہ گردی کے مترادف ہے

اسرائیل طے شدہ منصوبے تحت مسجد اقصیٰ کی زمانی اور مکانی تقسیم کی سازش کررہا ،بیان

قاہرہ(صباح نیوز) جامعہ الازھر نے مقبوضہ بیت المقدس اور مسجد اقصیٰ میں یہودی آباد کاروں کے دھاوئوں

اور اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کارروائیوں کی شدید مذمت کی ہے۔مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق جامعہ

الازھر کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ بیت المقدس میں یہودی آباد کاروں اور اسرائیلی

فوج کی کارروائیاں مذہبی انتہا پسندی کا کھلا ثبوت ہیں۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج کی طرف

سے بیت المقدس میں حالیہ ایام میں انتقامی کارروائیوں کی شدید مذمت کی جاتی ہے۔ یہودی آباد کاروں کے قبلہ

اول پر دھاوے اور مقدس مقام کی بے حرمتی ناقابل قبول اور مذہبی غنڈہ گردی کے مترادف ہے۔جامعہ الازھر

نے مسجد اقصیٰ کے باب رحمت میں فلسطینی نمازیوں پر تشدد اور وہاں پر یہودی آباد کاروں کے دھاووں کی

شدید مذمت کی۔بیان میں مزید کہا گیا کہ مسجد اقصیٰ اور اس کے تمام ارکان پرصرف مسلمانوں کا حق ہے اور

اسرائیلی ایک طے شدہ منصوبے تحت مسجد اقصی کی زمانی اور مکانی تقسیم کی سازش کررہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں