168

23 فروری کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1455ء چھاپا خانے کے موجد گٹن برگ نے انجیل مقدس شائع کی، چھاپا خانے کے ذریعے شائع ہونے والی یہ دنیا کی پہلی کتاب تھی

1903ء کیوبا نے گوانتا ناموبے ہمیشہ کے لیے ریاستہائے متحدہ امریکا کو لیز پر دیا

1947ء انٹرنیشنل آرگنائزیشن فوراسٹینڈرڈائزیشن کا قیام عمل میں آیا

1998ء اسامہ بن لادن نے تمام یہودیوں اور عیسائیوں کے خلاف جہاد کا فتوی جاری کیا

ولادت

1685ء – جارج فریدریک ہاندل، جرمن انگریز موسیقار

1744ء – مائر امشیل روتشیلڈ، جرمن بینکر اور تاجر

1924ء – الان مکلیوڈ کورمک، جنوبی افریقی امریکی ماہر طبیعیات

1925ء انور کمال پاشا، پاکستانی مصنف، فلم کہانی نویس و مکالمہ نگار، برصغیر کی بہت بڑی علمی شخصیت و ادیب حکیم احمد شجاع کے صاحبزادے بھی ہیں۔ سرکاری نوکری چھوڑ کر فلمی دنیا میں آئے اور نام کمایا، انہیں بہترین کارکردگی پر نگار ایوارڈ سے نوازا گیا۔ انوار کمال پاشا 13 اکتوبر 1987 کو انتقال کر گئے۔

1978ء محمد ثقلین، ایک پاکستانی بین الاقوامی ہاکی کھلاڑی ہے۔ انہوں نے بین الاقوامی ہاکی کا آغاز 1998ء میں کیا۔

وفات

715ء – ولید بن عبد الملک، اموی خلیفہ

1821ء – جان کیٹس، انگریز شاعر، جان کیٹس (John Keats) انگریزی ادب کا ایک عظیم شاعر اور رومانوی تحریک کی ایک اہم شخصیت تھا۔ اس کی خوبصورت شاعری حسوں کو متاثر کرتی ہے۔ اردو شاعرہ پروین شاکر نے کیٹس کو شاعر جمال کہا ہے۔ جان کیٹس 31 اکتوبر 1795 کو پیدا ہوئے۔

1848ء – جان کوئنسی ایڈمز، امریکی سیاستدان، صدر ریاستہائے متحدہ امریکا

1855ء- کارل فریڈرک گاؤس، جرمن ریاضی دان، ماہر فلکیات اور ماہر طبیعیات، کارل فریڈرک گاؤس (انگریزی: Carl Friedrich Gauss) ایک جرمن ریاضی دان اور سائنسدان تھا جو 30 اپریل 1777ء کو پیدا ہوا۔ اس نے ریاضی اور سائنس کی کئی شاخوںنظریۂ عدد (number theory)، احصاء (statistics)، ریاضیاتی تحلیل (mathematical analysis)، مساحیات (geodesy)، ارضی طبیعیات (geophysics)، برقی سکونیات (electrostatics)، فلکیات (astronomy)، بصریات (optics) اور بہت سی شاخوں میں قابل ذکر کام کیا۔ وہ ریاضی کا شہزاہ اور سب سے عظیم ریاضی دان کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ وہ ریاضی کی تاریخ میں ریاضی اور سائنس کی مختلف شاخوں میں سب سے زیادہ اثرانداز ہونے والوں میں سے ایک ہے۔ وہ ریاضی کو سائنس کی ملکہ کا لقب دیا تھا “۔ اس کا 23 فروری 1855ء کو انتقال ہو گیا۔

1969ء – مدھوبالا، بھارتی اداکارہ اور پروڈیوسر، (ان کا تفصیلی تعارف 14 فروری ان کی پیدائش کے دن دیا جا چکا ہے)

1973ء – ڈکنسن ڈبلیو رچرڈ، امریکی معالج

1992ء -محمد اسد، ایک یہودی گھرانے میں پیدا ہوئے ابتدائی عمر میں ہی عبرانی زبان سیکھی، 1932ء میں وہ ہندوستان آ گئے اور شاعر مشرق علامہ محمد اقبال سے ملاقات کی۔ 1939ء میں برطانیہ نے انہیں دشمن کا کارندہ قرار دیتے ہوئے گرفتار کر لیا۔ اور 6 سال بعد، 1945ء میں رہائی ملی۔
1947ء میں قیام پاکستان کے بعد وہ پاکستان آ گئے اور نئی ریاست کی نظریاتی بنیادوں کی تشکیل میں اہم کردار ادا کیا۔ انہیں پہلا پاکستانی پاسپورٹ جاری کیا گیا۔ بعد ازاں انہیں پاکستان کی وزارت خارجہ کے شعبہ مشرق وسطی میں منتقل کر دیا گیا جہاں انہوں نے دیگر مسلم ممالک سے پاکستان کے تعلقات مضبوط کرنے کا کام بخوبی انجام دیا۔ انہوں نے 1952ء تک اقوام متحدہ میں پاکستان کے پہلے سفیر کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دیں یہ عظیم انسان 23 فروری کو انتقال کر گئے۔

1995ء – جیمز ہیریئٹ، انگریز مصنف

2004ء – وجے آنند، بھارتی ہدایت کار، پروڈیوسر

2015ء – رانا بھگوان داس، پاکستانی وکیل اور جج، 20 دسمبر 1942ء کو نصیر آباد، ضلع قمبر شہداد کوٹ، سندھ میں ہندو گھرانے میں پیدا ہوئے۔انا 1965ء میں بار میں شامل ہوئے۔ محض سال کی پریکٹس کے بعد 1967 میں عدلیہ کا حصہ بنے، کئی سال سیشن جج کے طور پر فرائض انجام دیے۔ ءمیں سندھ ہائیکورٹ کے جج بنے اور2000 ءمیں سپریم کورٹ کے جج تعینات ہوئے ۔9 مارچ 2007 ءکو جسٹس افتخار چوہدری کی معزولی کے بعد جسٹس رانا بھگوان داس کو پرویز مشرف نے قائم مقام چیف جسٹس تعینات کیا۔ اس دوران بھگوان داس پاکستان میں موجود نہیں تھے۔ رانا بھگوان داس بھی ان دادگستروں میں شامل تھے جنہوں نے عبوری آئینی حکم کے تحت حلف اٹھانے سے انکار کیا۔

تعطیلات و تہوار


1984ء برونائی کا قومی دن

اپنا تبصرہ بھیجیں