111

اسرائیلی فوج کی جانب سے صحافیوں کوانسانی ڈھال بنائے جانے کا انکشاف

Spread the love

جنوری 2019 کے دوران صہیونی فوج نے آزادی صحافت اور ابلاغی حقوق کی 57خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا
دسمبر 2018 کی نسبت فلسطین میں آزادی صحافت کی خلاف ورزیوں کے واقعات میں اضافہ دیکھنے میں آیا، رپورٹ
جنوری کے دوران اسرائیلی فوج نے 15 صحافیوں کو فلسطینیوں کے مظاہروں کی کوریج کے دوران گولیاں مار کر زخمی کیا

غزہ (صرف اردو ڈاٹ کام)فلسطین میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے اداروں اور آزادی صحافت کی

پرچارک تنظیموں نے صہیونی فوج پر فلسطینی مظاہروں کے دوران صحافیوں کو ‘انسانی ڈھال بنائے جانے کا انکشاف کیا ہے۔

فلسطین میں مرکز برائے آزادی صحافت وترقی ‘مدی، کی طرف سے جاری ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے

کہ جنوری 2019 کے دوران صہیونی فوج نے آزادی صحافت اور ابلاغی حقوق کی 57خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ صہیونی فوج نے جنوری کے دوران آزادی صحافت کی 36خلاف ورزیاں کیں

جب کہ فلسطینی اتھارٹی کے سیکیورٹی اداروں کی طرف سے اس طرح کے 21واقعات رونما ہوئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دسمبر 2018 کی نسبت فلسطین میں آزادی صحافت کی خلاف ورزیوں کے واقعات میں اضافہ دیکھنے میں آیا۔

گذشتہ برس دسمبر میں 47واقعات رونما ہوئے تھے۔ جنوری کے دوران اسرائیلی فوج

نے 15 صحافیوں کو فلسطینیوں کے مظاہروں کی کوریج کے دوران گولیاں مار کر زخمی کیا

جب کہ دو الگ الگ واقعات میں 11صحافیوں کو ‘انسانی ڈھال بنایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں