پاکستان لانے کی درخواست 36

اسلام آباد ہائیکورٹ :مارگلہ کی پہاڑیوں میں غیرقانونی تعمیرات پر پابندی عائد

Spread the love

غیرقانونی تعمیرات پر پابندی

اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) اسلام آباد چیف جسٹس ہائی کورٹ اطہر من اﷲ کی عدالت نے مارگلہ کی پہاڑیوں میں غیرقانونی تعمیرات اور کاروباری سرگرمیوں پر پابندی عائد کردی

عدالت نے کہا کہ اگر مارگلہ کی پہاڑیوں پر تعمیرات ہوئیں تو چئیرمین سی ڈی اے اور وائلڈ لائف بورڈ ذمہ دار ہوگا ہوٹل انتظامیہ نے عدالت کو بتایا کہ مارگلہ ہلز پر سی ڈی اے سے معاہدہ کرکے ہوٹل بنایا اب بے دخل کیا جارہا ہے

اس موقع پر چیف جسٹس نے کہا کہ نجی کمپنی نے کیسے سی ڈی اے کے ساتھ معاہدہ کرکے کرایہ فارمز ڈائریکٹوریٹ کو دیا؟فارمز ڈائریکٹوریٹ کیسے سرکاری زمین پرقبضے کادعوٰی کرسکتا ہے ؟

بادی النظر میں فارمز ڈائریکٹوریٹ کا مارگلہ ہلز پر ملکیت کا دعوٰی خلاف آئین ہے اس موقع پر سی ڈی اے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ فارمز ڈائریکٹوریٹ نہ صرف ہوٹل بلکہ 8 ہزار 400 ایکڑ مارگلہ ہلز پر ملکیت کے دعویدار ہیں

اسلام آبادہائیکورٹ نے اٹارنی جنرل کو نوٹس کر کے معاونت کے لیے طلب کر لیا عدالت نے فارمز ڈائریکٹوریٹ، سی ڈی اے کو بھی نوٹس جاری کرتے ہوئے مارگلہ ہلز نیشنل پارک ایریا کے تمام مقدمات 9 نومبر سماعت کے لیے مقرر کردیے

اور مارگلہ کی پہاڑیوں پر تعمیرات پر پابندی کا حکم دیتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ اگر مارگلہ کی پہاڑیوں پر تعمیرات ہوئیں تو چئیرمین سی ڈی اے اور وائلڈ لائف بورڈ ذمہ دار ہوگا۔

غیرقانونی تعمیرات پر پابندی

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں