petrol 38

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ

Spread the love

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں

اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 12 روپے 44 پیسے تک کا ریکارڈ اضافہ کر دیا ، پٹرول 10 روپے 49 پیسے فی لٹر مہنگا، نئی قیمت 137 روپے 79 پیسے کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئی۔

وزارت خزانہ کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 12 روپے 44 پیسہ تک کا اضافہ کیا گیا، جس کے بعد ہائی اسپیڈ ڈیزل کی نئی قیمت 134 روپے 48 پیسے ہوگئی۔ مٹی کے تیل کی قیمت میں 10 روپے 59 پیسے اضافہ کر کے نئی قیمت 110 روپے 26 پیسے مقرر کر دی گئی ۔ وزا ر ت خزانہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق لائٹ ڈیزل آئل کی قیمت میں 8 روپے 84 پیسے اضافہ کیا گیا،

جس کے بعد لائٹ ڈیزل آئل کی قیمت 108 روپے 35 پیسے ہوگئی۔ نئی قیمتوں کا اطلاق کر دیا گیاجو آئندہ15 روز کیلئے نافذ العمل رہیں گی ۔دریں اثناء ترجمان وزارت خزانہ کی طرف سے بتایا گیا ہے پاکستان میں بنگلا دیش، سری لنکا، بھارت سمیت خطے کے دیگر ممالک کے مقابلے میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں سب سے کم ہیں۔

حکومت نے آج لگ بھگ دس روپے انچاس پیسے کے حساب سے پٹرول کی قیمت میں اضافہ کیا جو سوا آٹھ فیصد کے قریب اضافہ ہے، پندرہ دنوں میں عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں 10 سے 15 فیصد اضافہ ہوا،

روپے کی قدر میں بھی مسلسل گراوٹ کی وجہ سے پٹرولیم مصنوعا ت کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔ترجمان کے مطابق حکومت نے اوگرا کی سفارشات پر قیمتیں بڑھائیں، حکومت صرف 2 روپے پٹرولیم لیوی عوام سے وصول کر رہی ہے۔

اوگرا کی 5 روپے قیمت میں اضافے کی سفارش تھی، حکومت نے ساڑھے دس روپے کا اضافہ کیا یہ خبر غلط ہے، عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں دیکھتے ہوئے حکومت کم از کم ٹیکس لاگو کر رہی ہے۔حکومت 30 روپے پٹرولیم لیوی کی بجائے 5.62 روپے پٹرولیم لیوی کی مد میں چارج کر رہی ہے،

حکومت 17 فیصد سیلز ٹیکس کے بجائے اس وقت 6.84 فیصد ٹیکس وصول کر رہی ہے، عالمی مارکیٹ میں خام آئل کی قیمتوں اضافے نے پوری دنیا میں بحران پیدا کر دیا ہے۔ترجمان کے مطابق حکومت کو پورا احساس ہے موجودہ صورتحال میں عوام پر کم سے کم بوجھ ڈالا جائے۔

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں