44

ناراض ارکان کیساتھ مل بیٹھ کر بات کرنے کو تیار ہیں ،وزیراعلیٰ بلوچستان

Spread the love

ناراض ارکان کیساتھ بات

کوئٹہ (صرف اردو آن لائن نیوز) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے کہا ہے کہ ناراض ارکان کیساتھ مل بیٹھ کر بات کرنے کو تیار ہیں۔ کوشش ہے سب کچھ جمہوری انداز میں چلے۔

بلوچستان عوامی پارٹی کے رہنماؤں کیساتھ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ عدم اعتماد تحریک کوجمع کرایا گیا،کچھ تحفظات ہیں، ناراض ساتھی ہمارے بھائی ہیں۔ یہ ہمارے بھائی کل بھی تھے اور آج بھی ہیں، پہلے بھی ان کے پاس بیٹھے اورآج بھی بیٹھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ناراض بھائیوں کے ساتھ مل بیٹھ کر بات کرنے کو تیار ہیں۔ عوام کے مسائل اور سیاسی صورتحال پر بھی کام کرنا ہو گا۔ آخری دن تک کوشش ہے کہ تمام جمہوری انداز میں چلے۔ کچھ لوگ ڈسپلن کا خیال نہیں کرتے تو ان کے خلاف کارروائی ہوگی۔

اگر تحریک عدم اعتماد والے دن ہی فیصلہ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اکتوبر، نومبرمیں پارٹی الیکشن کرانے کا ارادہ تھا، ناراض اراکین ہماری پارٹی کا حصہ ہیں اوررہیں گے۔ ہمارے لیے سب قابل احترام ہیں، ایک ماہ بعد ہماری پارٹی مزید مضبوط نظرآئے گی، ہرطرح کے سیاسی بحران کا سامنا کریں گے۔

عدم اعتماد کی تحریک کے لیے نمبرگیم آپ کے سامنے آجائے گا،۔دوسری طرف وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال کی پارٹی صدارت سے استعفیٰ کے بعد رکن صوبائی اسمبلی ظہور بلیدی کو پارٹی کا قائم مقام صدر منتخب کرلیاگیا،

الیکشن ایکٹ 2017 کے تحت الیکشن کمیش کو بھی تقرری کی کاپی ارسال کر دی گئی۔بلوچستان عوامی پارٹی نے رکن صوبائی اسمبلی ظہور بلیدی کو قائم مقام پارٹی صدر مقرر کر دیا گیا،

پارٹی کے جنرل سیکرٹری منظور احمد کاکڑ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن میں قائمقام صدر کا اعلان کیا گیا۔نوٹیفکیشن کے مطابق قائمقام صدر کی تعیناتی پارٹی کے نظم و نسق بہتر طریقے سے چلانے کیلئے کی گئی ہے،

جام کمال کی استعفیٰ کے بعد پارٹی الیکشن کیلئے صدر کی تقرری ضروری ہے۔ الیکشن ایکٹ 2017 کے تحت الیکشن کمیش کو بھی تقرری کی کاپی ارسال کر دی گئی ہے۔

ناراض ارکان کیساتھ بات


ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں