سعد رضوی اثاثے منجمد 29

کالعدم تحریک لبیک کے سربراہ سعد رضوی کی رہائی کا حکم

Spread the love

سعد رضوی کی رہائی

لاہور(صرف اردو آن لائن نیوز) ڈپٹی کمشنر لاہور نے کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کے

سربراہ سعد حسین رضوی کی رہائی کا حکم دے دیا۔ڈپٹی کمشنر کا یہ حکم لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے سعد رضوی کی گرفتاری کو غیر قانونی قرار دیے جانے کے کچھ دن بعد سامنے آیا ہے جہاں ٹی ایل پی کے سربراہ کے چچا کی جانب سے ان کی مسلسل قید کے خلاف دائر درخواست کو منظور کر لیا گیا تھا۔

سعد رضوی کو پولیس نے 12 اپریل کو حراست میں لیا تھا جہاں ان پر الزام تھا کہ انہوں نے اپنے کارکنوں کو قانون کو اپنے ہاتھ میں لینے کے لیے اکسایا تھا کیونکہ ٹی ایل پی کے سربراہ کے مطابق حکومت نے فرانسیسی سفیر کو نکالنے کے اپنے وعدے سے انحراف کیا تھا۔ڈپٹی کمشنر لاہور نے اپنے حکم میں لاہور ہائی کورٹ کے یکم اکتوبر کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ میں سعد رضوی کی فوری رہائی کی اجازت دیتا ہوں۔

اس کے علاوہ ڈپٹی کمشنر کے حکم میں سپریم کورٹ کے وفاقی جائزہ بورڈ کے حراست کے حوالے سے لیے گئے پہلے دو فیصلوں کا حوالہ بھی دیا۔اس میں کہا گیا کہ سعد رضوی کی نظر بندی میں توسیع کے لیے بورڈ کے سامنے 29 ستمبر کو ایک ریفرنس دائر کیا گیا تھا اور بورڈ نے 2 اکتوبر کو ٹی ایل پی سربراہ کی حراست کی مدت میں ایک ماہ کی توسیع کی تھی۔

اس سلسلے میں مزید کہا گیا کہ یہ معاملہ 9 اکتوبر کو وفاقی جائزہ بورڈ کی میٹنگ میں اٹھایا گیا اور کیس کو نمٹا دیا گیا۔9 اکتوبر کے اجلاس میں سپریم کورٹ کے جسٹس مقبول باقر کی سربراہی میں جائزہ بورڈ نے پنجاب حکومت کی سعد رضوی کی نظر بندی میں توسیع کی درخواست پر سماعت کی

جس میں سوال کیا گیا تھا کہ جب لاہور ہائی کورٹ پہلے ہی ٹی ایل پی سربراہ کی نظربندی کو غیر قانونی قرار دے چکی ہے تو کس بنیاد پر توسیع مانگی گئی ہے۔اس کے بعد پنجاب حکومت نے اپنی درخواست واپس لے لی تھی۔رضوی کی نظر بندی ابتدائی طور پر 10 جولائی کو ختم ہونے والی تھی لیکن اس وقت لاہور ہائی کورٹ کے ایک جائزہ بورڈ نے پنجاب کے محکمہ داخلہ کی رضوی کی نظر بندی میں توسیع کی درخواست مسترد کردی تھی،

اس حوالے سے 8 جولائی کو اس مقدمے کا تفصیلی حکم جاری کیا گیا تھا جس میں مشاہدہ کیا گیا تھا کہ اگر سعد رضوی کسی اور مقدمے میں مطلوب نہیں ہیں تو انہیں فوری طور پر رہا کیا جائے۔تاہم اس وقت ڈپٹی کمشنر لاہور نے انسداد دہشت گردی ایکٹ 1997 کے سیکشن 11-ای ای ای (مشتبہ افراد کو گرفتار اور حراست میں لینے کے اختیارات) کے تحت ایک نیا نوٹیفکیشن جاری کیا تھا اور سعد رضوی کو مزید 90 دنوں کے لیے حراست میں لے لیا گیا تھا۔

سعد رضوی کی رہائی

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں