وزیر اعظم مصنوعی قلت 45

آٹا اور چینی کی مارکیٹ میں شدید قلت، مہنگے داموں فروخت جاری

Spread the love

مہنگے داموں فروخت جاری

لاہور (صرف اردو آن لائن نیوز) صوبائی دارالحکومت سمیت صوبہ بھر میں چینی اور آٹا کی

قیمتیں بے قابو ہو گئیں عوام کو عام مارکیٹ میں مقررہ ریٹوں پر چینی دستیاب ہے نہ آٹا ،دوسری

طرف یوٹیلیٹی سٹورز پر بھی چینی میسر نہیں رہی ۔یوٹیلٹی سٹورز نے ایک کلو چینی کے لئے ایک

ہزار روپے کی اشیاء خرد و نوش کی خریداری کی شرط رکھی مگر اب سٹورز انتظامیہ ایک ہزار

روپے کی خریداری کرنے والوں کو بھی چینی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے بری طرح ناکام ہو

گئی یہاں تک کہ چیف سیکرٹری پنجاب بھی چینی کے سرکاری ریٹس پر عمل درآمد نہیں کروا سکے

چینی کا سرکاری ریٹ89.75 روپے فی کلو مقرر کیا گیا تھا اس ریٹ کی بجائے 110تا 120روپے فی

کلو گرام فروخت ہو رہی ہے اور شہر میں عام آٹا 55روپے کلو کی بجائے 70روپے جبکہ چکی کا آٹا

100روپے کلو فروخت ہو رہا ہے واضح رہے کہ چند روز قبل چیف سیکرٹری پنجاب اور وزیر

انڈسٹری میاں محمد اسلم اقبال کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں چینی کے اوپر مارکیٹ میں

پرچون کی قیمت89.75 روپے مقرر کی گئی اور اس پر عمل درآمد کے لئے صوبہ کے تمام ڈپٹی

کمشنرز کو ٹاسک دیا گیا کہ اس سے زائد قیمت پر فروخت کرنے والے دکانداروں کے خلاف کریک

ڈائون کیا جائے مگر تمام ڈپٹی کمشنرز اس پر عمل درآمد کروانے میں ناکام نظر آئے بڑے گلی محلوں

میں 110اور بڑے ڈیپارٹمنٹل سٹورز پر 120روپے میں فروخت کی جا رہی ہے ۔دوسری جانب اسی

فیصد یوٹیلٹی سٹورز پر چینی ہی دستیاب نہیں آٹا بھی مہنگے داموں فروخت کیا جا رہا ہے جسے

پوچھنے والا کوئی نہیں.

مہنگے داموں فروخت جاری

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں