سی پیک فیزون 30

سی پیک فیزون میں 25 ارب ڈالرکی سرمایہ کاری ہوچکی ، خالد منصور

Spread the love

سی پیک فیزون

اسلا م آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) معاون خصوصی برائے سی پیک امور خالد منصور نے کہا ہے سی پیک منصوبوں کے فیزون میں 25 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری ہوچکی ہے۔ 13 ارب ڈالر کے منصوبے مکمل اور 12 ارب ڈالر کے منصوبے زیر تکمیل ہیں۔

گزشتہ روز وفاقی دارالحکومت میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا فیز ٹو کے منصوبوں پر پیشرفت کا آغاز کردیا گیا ہے ، کچھ اقتصادی زونز میں کام بھی شروع ہوچکا ہے، علامہ اقبال اقتصادی زون میں چینی کمپنیاں سرمایہ کاری کررہی ہیں،

فیصل آباد اقتصادی زون میں پری فیبریکیٹڈ گھر تعمیر کرنے کے کام کا آ غا ز کیا گیا ہے، پری فیبریکیٹڈ گھر صرف 40 روز میں بنے گا۔چینی کمپنی نے اس ضمن میں 2 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے، دو اور تین پہیوں والی الیکٹرک وہیکل بنانے کے پلانٹ نے بھی کام شروع کردیا ہے،

ایل ای ڈی لائٹس کی 18 ایکڑ پر تین کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کی گئی ہے، چینی سرمایہ کاروں کو جو مسائل تھے وہ حل کردیے ہیں۔ 845 ملین ڈالر کی سرمایہ ہوچکی ہے ، سی پیک رکنے کی باتیں درست نہیں ہیں ،

سی پیک فیز ٹو میں داخل ہوچکا ہے ، حکومت ترجیحی بنیادوں پر سرمایہ کاروں کے مسائل حل کررہی ہے ، چینی کمپنیوں کے سی ای اوز وزیر اعظم کا شکریہ ادا کرنے آئے تھے۔ چینی سفارتخانے کیساتھ بھرپور رابطے میں ہیں ، چار اسیپشل اکنامک زونز میں سرمایہ کاری سے متعلق ون ونڈو سیل بنایا جارہا ہے ،

فیز ٹو میں دو نہیں بہت زیادہ سیکٹرز ہونگے ، سی پیک منصوبوں کے خاطر خواہ انتظامات کیے گئے ہیں۔سکیورٹی پر چینی حکو مت کا اعتماد بحال ہوا ہے اورسی پیک کے تمام منصوبوں کی بہترین سکیورٹی کی جارہی ہے ، سی پیک عملے پر جو حملہ کیا گیا وہ دوران سفر ہوا سائٹ پر نہیں۔

سی پیک کیلئے وزیراعظم کے معاون خصوصی خالد منصور نے مزید کہا امن قائم ہو گیا تو سی پیک رابطے افغانستان تک بڑھنے کی امید ہے، افغانستان میں تعمیر نو سے کئی مواقع پیدا ہوں گے جبکہ چین بھی سی پیک اور رابطوں کو بڑھانا چاہتا ہے ،

سی پیک کے نئے منصوبوں پر غور کرنے کیلئے چین اور پاکستان کی مشترکہ تعاون کمیٹی کا دو روزہ اجلاس 23ستمبر کو شروع ہوگا ۔ یہ اجلاس جولائی میں داسو حملے میں نو چینی ورکرز کی ہلاکت کے بعد ملتوی ہو گیا تھا۔سربراہ سی پیک اتھارٹی نے بتایا سی پیک کے تحت چین سے لیے گئے تین ارب ڈالر کے قرضے کی ری شیڈولنگ کیلئے پاکستان کی درخواست پر دونوں ممالک میں بات چیت جاری ہے۔

وزیراعظم سے ملنے والی ان تمام کمپنیوں نے پاکستان میں 845ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے جو مزید بڑھے گی۔ خصوصی اکنامک زون میں انتظامی کمپنیوں کو مکمل بااختیار کرینگے تاکہ سرمایہ کاروں کے مسائل موقع پر حل ہو سکیں۔

فیصل آباد خصوصی اکنامک زون میں سرمایہ کاری کرنیوالی چینی کمپنیوں نے زمین لیز پر نہیں بلکہ ملکیتی بنیادوں پر لی ہے۔ ایگری فارم پر ابھی غور کرنا ہے اس سے چین کے تعاون سے زراعت کے شعبے میں بہتری آئے گی۔

فیزٹو میں توانائی اور سڑکوں کے علاوہ دیگر منصوبوں پر کام ہو گا۔تمام سیاسی جماعتوں نے سی پیک منصوبوں کی حمایت کی ہے کیونکہ یہ ایک جماعتی نہیں قومی منصوبہ ہے۔ سی پیک منصوبوں میں کرپشن کی اطلاعات میں کوئی صد اقت نہیں۔

جن پراجیکٹس کی رفتار سست ہے ان پر ایکشن پلان بنایا گیا ہے،جو پراجیکٹ تاخیر کا شکار ہیں ان پر نظر ہے۔ ان پر فالو اپ کرکے ان کو تیز بنانے کی کوشش کرینگے ۔

سی پیک فیزون

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں