طالبان رہائی سہیل شاہین 39

کشمیرسمیت دنیابھرکے مسلمانوں کے حق میں آواز بلند کرنا ہمارا حق, افغان طالبان

Spread the love

کشمیرسمیت مسلمانوں کے

کابل (صرف اردو آن لائن نیوز) افغان طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے کہا ہے افغان طالبان مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کے حق میں آواز بلند کرنے کا حق رکھتے ہیں۔

بی بی سی کیساتھ زوم انٹرویو میں طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے امریکہ کیساتھ ہونیوالے دوحہ معاہدے کی شرائط کو یاد کرواتے ہوئے کہا ان کی کسی بھی ملک کیخلاف مسلح آپریشن کرنے کی کوئی پالیسی نہیں ۔

دوحہ سے بات کرتے ہوئے سہیل شاہین نے کہا مسلمان ہونے کے ناطے یہ ان کا حق ہے کہ کشمیر، بھارت اور کسی بھی دوسرے ملک میں بسنے والے مسلمانوں کیلئے آواز اٹھائیں، ہم اپنی آواز بلند کریں گے اور یہ کہیں گے مسلمان آپ کے اپنے لوگ ہیں،

آپ کے اپنے شہری ہیں۔ آپ کے قانون کے تحت وہ برابری کے حقوق کے مستحق ہیں۔ بھارت پر دنیا کی نظریں مرکوز ہیں۔1999ء میں اغواء ہونے والے جہاز کے الزام پر جواب دیتے ہوئے سہیل شاہین نے دعو یٰ کیا طالبان نے طیارے کے اغوا میں کوئی کردار ادا نہیں کیا اور اس حوالے جو مدد فراہم کی اس پر بھارتی حکومت کو شکرگزار ہونا چاہیے ۔

بھا رت نے ہمیں درخواست کی کہ طیارے میں فیول کم رہ گیا ہے اور اس کے بعد پھر ہم نے محصور مسافروں کی رہائی کیلئے مدد فراہم کی۔سہیل شاہین نے طالبان مخالف پروپیگنڈے کا الزام بھارتی میڈیا پر عائد کیا ہے۔

سہیل شاہین نے حقانی نیٹ ورک سے متعلق بات کرتے ہو ئے کہا حقانیوں کیخلاف پروپیگنڈہ محض دعوؤں پر مبنی ہے۔ حقانی کوئی گروپ نہیں ، وہ افغانستان کی اسلامی امارت کا حصہ اور اسلامی امارت افغانستان ہیں۔

کشمیرسمیت مسلمانوں کے

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں