طالبان جنگ ختم اعلان 50

کالعدم ٹی ٹی پی سے متعلق کمیشن کا علم نہیں, افغان سرزمین پاکستان کیخلاف استعمال نہیں کرنے دینگے, طالبان

Spread the love

کالعدم ٹی ٹی پی

کابل(صرف اردو آن لائن نیوز) افغانستان پر کنٹرول حاصل کرنے والے طالبان کے مرکزی ترجمان ذبیح اﷲ مجاہد نے سی آئی اے ڈائریکٹر اور ملا عبدالغنی برادرکی ملاقات کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ غیرملکی افواج کو 31 اگست تک مکمل انخلا کرنا ہوگا،

ڈیڈ لائن گزرنے کے بعد نئی حکمتِ عملی کا اعلان کریں گے جبکہ ذبیح اﷲ نے افغان شہریوں کے لیے کابل ایئرپورٹ کی بندش کا اعلان کرتے ہوئے امریکا کو خبر دار کیا ہے کہ افغانستان سے ہنرمند افغانیوں کے انخلا سے باز رہے،

کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) سے متعلق کمیشن بنانے کا علم ہے نہ ہی اس کی کوئی ضرورت ہے،پاکستان کے خلاف افغان سرزمین کسی کو بھی استعمال کی اجازت نہیں دیں گے۔ طالبان ترجمان کا کہنا تھا کہ حکومت بنانے کیلئے مشاورتی عمل جاری ہے۔

ذبیح اﷲ مجاہد کا کہنا تھا کہ بھارت کو مسئلہ ہے تو سفارتی طریقے پر حل کرے، بھارتی منفی پروپیگنڈہ درست نہیں ۔ کسی کو اجازت نہیں دینگے پاکستان یا کسی اور ملک کے خلاف ہماری زمین استعمال کرے۔ امید ہے دیگر ممالک بھی ایسا ہی کریں گے۔

بھارت سمیت ہر ملک کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتے ہیں ہے۔ ہم چاہتے ہیں اقوام متحدہ ہماری مدد کرے۔ ایسی مدد چاہتے ہیں جو غیر مشروط ہو۔ ۔ جلد افغانستان کی قومی فوج کی تشکیل ہو گی ۔

منگل کو طالبان کے ترجمان ذبیح اﷲ مجاہد نے پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ امریکا لوگوں کو ایئرپورٹ بلاتا ہے اور پھر انہی لوگوں پر فائرنگ کر دیتا ہے اس لیے اب ایئرپورٹ افغان شہریوں کے لیے بند کر رہے ہیں صرف غیرملکیوں کو ملک سے جانے کی اجازت ہوگی۔

ترجمان ذبیح اﷲ مجاہد نے مزید کہا کہ دس دنوں میں تشدد، قتل یا دہشت گردی کا ایک واقعہ بھی نہیں ہوا۔ پورے ملک میں سوائے کابل ایئرپورٹ کے مکمل طور پر امن و امان قائم ہے اور وہاں بھی ہلاکتوں کی ذمہ دار ذمہ دار امریکی فوج ہے۔

ترجمان طالبان نے مزید کہا کہ تمام افغانوں کو تحفظ کا یقین دلاتے ہیں۔ افغان شہری دربدر ہونے کے بجائے اپنے ملک میں باعزت طریقے سے رہیں اور جو چلے گئے ہیں وہ واپس آکر ملک کی تعمیر و ترقی میں کردار ادا کریں۔طالبان کے ترجمان ذبیح اﷲ مجاہد نے کہاکہ 20سال پورے ملک نے جنگ کاسامناکیا،

پچھلے10دنوں سے کابل سمیت پورے ملک میں امن ہے، پنجشیر میں جنگ نہیں چاہتے، حکومت سازی کیلئے مشاورتی عمل کامیابی سے جاری ہے۔ترجمان طالبان نے کہا کہ کابل ایئرپورٹ کے علاوہ پورے ملک میں حالات نارمل ہیں،

تمام بینکوں نے آزادی کیساتھ کام شروع کردیاہے،لوگ بینکوں سے اپنی رقوم نکلواسکتے ہیں۔ تمام افغانوں کوتحفظ کایقین دلاتے ہیں، عام معافی کے اعلان پر قائم ہیں، وہ 31 اگست تک غیر ملکی انخلا مکمل ہو جائے۔

اپنے لوگ نکال لیں، افغان عوام کو لے جانے کی اجازت نہیں دیں گے۔امریکا افغان عوام کو وطن چھوڑنے کی ترغیب نہ دے۔ذبیح اﷲ مجاہد نے ایک بار پھر واضح کیا کہ افغانستان کی سرزمین پڑوسی ملک کے خلاف ہرگز استعمال نہیں ہو گی ۔

جلد افغانستان کی قومی فوج کی تشکیل ہو گی۔افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اﷲ مجاہد کا کہنا تھا کہ ایک بارپھرآپ کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے خوشی محسوس ہورہی ہے،۔ذبیح اﷲ مجاہد نے کہا کہ حکومت کی تشکیل اور انتقال اقتدار پر مشاورتی عمل کامیابی سے آگے بڑھ رہا ہے،ہمارے دروازے سب کیلئے کھلے ہوئے ہیں آئیں مل کرکام کریں کیونکہ ہم مخلوط حکومت کے قیام کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں،

نئی حکومت مغربی طرز کی نہیں ہوگی، ہم چاہتے ہیں جلد سے جلد حکومت کی تشکیل ہوجائے۔افغان طالبان کے ترجمان نے تمام ممالک سے اپیل کی کہ وہ اپنے سفارت خانے بند نہ کریں کیونکہ ان کی حفاظت پر طالبان مامور ہیں،

تمام سفارت خانوں کی حفاظت طالبان کی ذمہ داری ہے۔انہوں نے بتایا کہ بہت سے سفارتخانے ہمارے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں، تمام ممالک سے اپیل ہے کہ وہ بھی پر امن رہیں اور اپنے سفارت خانوں کو معمول کے مطابق کھولے رکھیں، جن ممالک کے سفارت خانے کھلے ہیں ان کاشکریہ ادا کرتے ہیں۔امریکا شہریوں کو لالچ دے کر افغانستان سے نکال رہا ہے۔

ذبیح اﷲ مجاہد نے کہا کہ کابل ایئرپورٹ پرلوگوں کی بڑی تعداد موجود ہے، امریکا اپنی پالیسی کو جاری رکھنے کے لیے افغان شہریوں کو لالچ دے کر نکال رہا ہے، امریکی حکام شہریوں کو ایئرپورٹ پر بلاتے اور جب ہجوم بڑھتا ہے تو فائرنگ کردیتے ہیں،

۔ذبیح اﷲ مجاہد نے کہا کہ خواتین سے متعلق ہماری پالیسی واضح ہیکام پر قدغن نہیں لگائیں گے، اداروں میں سیکیورٹی صورتحال ابھی بہتر نہیں اس لیے خواتین کو فی الحال روک دیا، ایسے خواتین کو گھر بیٹھ کر تنخواہیں ادا کی جائیں گی اور صورت حال بہتر ہوتے ہی انہیں کام پر آنے کی اجازت ہوگی۔

سفارت کاروں سے ملاقاتوں کا شیڈول بنا رہے ہیں تاکہ صورت حال آگے بڑھے، کوئی گرفتاری نہیں کی اور نہ ہی کسی پر تشدد کیا جائیگا،کسی سیکوئی انتقام نہیں لیا جارہا، ہم آگے بڑھنے کی پالیسی کو لے کر چل رہے ہیں۔

کالعدم ٹی ٹی پی

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں