244

اسلام اور مسلمانوں کے خلاف سرگرم ڈچ سیاست دان نے اسلام قبول کر لیا

Spread the love
جورم وین کلورین تصویر بشکریہ ڈی ڈبلیو ڈاٹ کام

اسلام اور مسلمانوں کے خلاف سرگرم ڈچ سیاست دان اور ہالینڈ کے سابق رکن اسمبلی جورم وین کلِورین نے اسلام قبول کرلیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے ’’پولیٹکس‘‘ اور ’’ڈی ڈبلیو‘‘کے مطابق

اسلامی تعلیمات کا مذاق اُڑانے والے مسلمان مخالف ہالینڈ کے 40 سالہ سیاست دان

اسلامی تعلیمات سے متاثر ہوکر مذہب اسلام میں داخل ہوگئے۔

وین کلِورین نے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا کہ انہوں نے گذشتہ برس 26 اکتوبر میں اسلام قبول کرلیا تھا

انہوں نے بتایاکہ اسلام سے متاثر ہونے کی ابتدا اسلام مخالف کتاب لکھنے کے دوران ہوگئی تھی۔

اسلامی کتب کا تنقیدی جائزہ لیتے ہوئے اسلام کی روشن حقیقتیں ان پر ظاہر ہوئیں۔

وین کلِورین نے مزید کہا کہ اس کتاب نے میری زندگی بدل دی ہے

قارئین کو میرے اسلام مخالف سے اسلام قبول کرنے تک کا سفر بھی اس کتاب میں مل جائے گا۔

وین کلِورین اپنے لیڈر گیرت وائلڈرز کے دست راست اور پارٹی آف فریڈم سے رکن اسمبلی تھے۔

وین کلِورین نے سات سال تک اسمبلی میں اسلام مخالف بل پیش کیے اور مہم چلائیں

جن میں برقع سمیت دیگر اسلامی روایات پر پابندی عائد کرنا بھی شامل ہے۔

انہوں نے اپنے گذشتہ رویے پر شرمندگی ظاہر کی اور کہا کہ ہم نے اسلام کو حقیقت کی نظر سے دیکھا ہی نہیں تھا

صحافی نے ان سے سوال کیا کہ آپ تو کہتے تھے کہ اسلام جھوٹ اور قرآن کے بارے میں بھی اناپ شناپ کہا کرتے تھے

جس پر انہوں نے کہا کہ میں اپنے ان بیانات اور رویے پر شرمندہ ہی ہو سکتا ہوں

ان کی بیوی کے رویے کے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میری بیوی کو میرے مسلمان ہونے پر کوئی اعتراض نہیں

بیوی کا کہنا ہے کہ اگر میں مسلمان ہو کر خوشی محسوس کرتا ہوں تو وہ اس میں بہت خوش ہے،

انہوں نے مزید کہا کہ ان کی بیوی آج اس زمانے کے مقابلے میں زیادہ خوش ہے جب میں اسلام کی مخالفت میں متحرک تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں