برائلر گوشت کی قیمت 135

حکومت بیمار مرغیوں کا گوشت مارکیٹ میں فروخت ہونے سے روکے: ماہرین صحت

Spread the love

بیمار مرغیوں کا گوشت

کراچی(صرف اردو آن لائن نیوز) ایک بیماری پھوٹنے کی وجہ سے ملک بھر کے پولٹری فارمز میں

بڑے پیمانے پر مرغیوں کے مرنے کی رپورٹس پر ماہرین صحت نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ

اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ بیمار جانوروں کا گوشت مارکیٹ میں فروخت نہ کیا جائے اپنی

فوڈ ریگولیٹری باڈیز کو فعال کرے۔ پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن(پی ایم اے) نے کہا ہے کہ ‘کچھ

عرصے سے مرغیوں میں بیماری کی رپورٹس میڈیا میں چل رہی ہیں جن کی پاکستان پولٹری ایسوسی

ایشن (پی پی اے) نے بھی تصدیق کی اور کہا کہ مرغیوں کی بڑے پیمانے پر اموات کی وجہ سے

کچھ فارمرز اپنے پولٹری فارم بند کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں’۔انہوں نے صوبائی حکومتوں پر زور

دیا کہ خوراک کے محکموں کو فعال کیا جائے تا کہ عوام کو صرف حفظانِ صحت کے اصولوں پر

اترنے والے گوشت کی فراہمی یقینی بنائی جائے اور معصوم لوگوں کی زندگیوں سے کھیلنے والوں

کے خلاف کارروائی کی جائے۔پی ایم اے کا کہنا تھا کہ ‘معلوم ہوتا ہے کہ پولٹری فارمز میں بیماری

بڑے پیمانے پر پھیل گئی ہے اور بظاہر غیر صحت بخش چکن مارکیٹ میں فروخت کی جارہی ہے،

بدقسمتی سے میڈیا میں یہ بھی رپورٹس ہیں کہ کچھ دکان دار سستے نرخوں پر صارفین کو مردہ

مرغیاں بھی فروخت کررہے ہیں، حکومت کو ان کے خلاف کارروائی کر کے قانون کے مطابق سزا

دینی چاہیے’۔دوسری جانب پاکستان پولٹری ایسوسی ایشن نے وضاحت کی کہ پولٹری فارمز میں

بیماری کے پھیلاؤ کی وجہ نیوکاسل نامی بیماری ہے جو ایک انتہائی متعدی وائرل بیماری ہے اور ہر

عمر کی پولٹری کو متاثر کرتی ہے۔

بیمار مرغیوں کا گوشت

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں