فون کالز پر ٹیکس 55

پاکستان میں مہنگائی ترکی ، ایران سے کم ہے، شوکت ترین

Spread the love

پاکستان میں مہنگائی کم

اسلام آباد(صرف اردو آن لائن نیوز) قومی اسمبلی اجلاس میں وزیرخزانہ شوکت ترین نے مہنگائی پر

تحریری جواب دے دیا۔تحریری جواب میں کہا گیا ہے کہ اپریل2021میں کورونا وائرس کے دوران

طلب اور رسد میں فرق کی وجہ سے دنیا بھر میں مہنگائی بڑھی، ایران میں 49.5فیصد جبکہ ترکی

میں 17.1فیصد مہنگائی ریکارڈ کی گئی۔وزیرخزانہ نے کہا کہ پاکستان میں 2018-19میں مہنگائی کی

شرح 6.8 فیصد تھی، 2019-20میں پاکستان میں مہنگائی کی شرح 10.7فیصد رہی، جولائی سے

اپریل 2021 تک مہنگائی کی شرح 8.6فیصد رہی۔تحریری جواب میں کہا گیا ہے کہ پام آئل کی قیمت

اپریل2021میں609ڈالرز سے بڑھ کر 1075ایم ٹی ڈالر ہوگئی، بین الاقوامی مارکیٹ میں پام آئل کی

قیمت میں 76.5فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔شوکت ترین نے کہا کہ اپریل2021میں عالمی منڈی میں

سویابین کی قیمت میں 168فیصد اور خام تیل کی قیمت میں 168فیصد اضافہ ہوا۔وزارت خزانہ کے

تحریری جواب میں کہا گیا ہے کہ بین الاقوامی مارکیٹ میں چائے کی قیمت میں 12.3فیصد اضافہ ہوا۔

تحریری جواب میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں گزشتہ سال پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں45فیصد

اضافہ ہوا۔گذشتہ برس بین الاقوامی مارکیٹ میں گندم کی قیمت میں27فیصد اضافہ ہوا، پاکستان میں

آٹے کی قیمت میں 28فیصد بڑھی۔وزارت خزانہ کاکہنا ہے کہ بین الاقوامی مارکیٹ میں چینی کی قیمت

میں 56فیصد اضافہ ہوا، پاکستان میں ریفائن چینی کی قیمت میں 18فیصد اضافہ ہوا۔ تحریری جواب

میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ برس بین الاقوامی مارکیٹ میں خوردنی تیل کی قیمت میں 76فیصد اضافہ

ہوا، پاکستان میں ڈالڈا گھی کی قیمت میں 21فیصد اضافہ ہوا۔ضمنی سوال کے جواب میں پارلیمانی

سیکرٹری خزانہ زین قریشی نے کہا کہ یہ کہنا کہ حکومت کو مہنگائی کی کوئی پروا نہیں بالکل غلط

ہے،حکومت کو احساس ہے اسلئے اس کے خاتمے کیلئے ہنگامی اقدامات کئے گئے ہیں،حکومت نے

4ملین ٹن گندم درآمد کی ہے تاکہ آٹے کی قیمتوں کو کنٹرول کیا جا سکے، اسی طرح چینی بھی درآمد

کرنے کا فیصلہ کیا۔وزیر اعظم عمران خان نے ضرور کہا تھا کہ نیا پاکستان بنائیں گے مگر یہ نہیں

کہا تھا کہ جادو کی چھڑی اٹھائیں گے تو نیا پاکستان بن جائے گا۔ انہوں نے واضح کیاکہ نیا پاکستان

پالیسی سے بنے گا۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں پارلیمانی سیکرٹری برائے تجارت عالیہ حمزہ ملک

نے بتایا کہ پاکستان کی بر آمدات میں 13.4 تک اضافہ دیکھا گیا ہے، بر آمدات جولائی سے اپریل

2021 تک 21 ارب ڈالر تک پہنچ گئی ہیں جو 25 ارب ڈالر تک پہنچ جائیں گی جو پاکستان کی تاریخ

میں سب سے زیاد بر آمدات ہوگی۔جمعرات کو اسمبلی اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران انہوں نے

کہا کہ ملک میں زراعت کے حوالے سے جو پالیسی بنائی گئی ہے اس کے نتائج اب آنا شروع ہو گئے

ہیں حکومت ایکسپورٹرز کو اضافی دو فی صد دے رہے ہیں۔ شگفتہ جمانی نے کہا کہ ہم زرعی ملک

ہونے کے باوجود ٹماٹر اور دیگر سبزیاں اور دیگر اشیاء باہر سے منگوا رہے ہیں اس عالیہ حمزہ

ملک نے کہا کہ ہم نے زراعت کے لئے 11 ارب روپے دیہی علاقوں کیلئے دیئے ہیں کرونا وائرس

کی وجہ سے پوری دنیا کی ایکسپورٹ کم ہوئی لیکن پاکستان کی ایکسپورٹ بڑھی ہے انہوں نے کہا

کہ افر یقی ممالک میں چار مشن تھے جو اب دس ہو گئے ہیں۔ پارلیمانی سیکرٹری برائے خزانہزین

قریشی نے کہا کہ مالی سال 2018-19 میں مہنگائی کی شرح 6.8 تھی 2019-20 میں بڑھ کر 10.7

ہوگئی جو کرونا وائرس کی وجہ سے بڑھی تھی جو 2020-21 میں کم ہو کر 8.6 فیصد ہوئی ہے

انہوں نے کہا کہ ہم نے 4ملین میٹرک ٹن گندم امپورٹ کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اس وقت

22اسلامک بینکنگ انٹی ٹیوشنز ہیں جس میں 3456 برانچز اور1638 ونڈوز ملک بھر میں 31دسمبر

2020 تک قائم کیے گئے ہیں سٹیٹ بینک کو بہتر اسلامک بینکنگ کرنے پربین الاقوامی ایوارڈ بھی

ملا ہے پارلیمانی سیکرٹری برائے منصوبہ بندی کنول شوزب نے کہا کہ پاکستان تحریکِ انصاف کی

حکومت نے ایک بہت بڑا کنسٹرکشن پیکج دیا ہے جب کرونا نے پوری دنیا کو ہلا دیا ہے انہوں نے

کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کی بہت بری حالت تھی اب ٹیکسٹائل سیکٹر میں بہتری آئی ہے اور ملوں میں

مزدوروں کی کمی ہو گئی ہے سی پیک کے تحت 50.70بلین امریکی ڈالرز کے قریب سرمایہ کاری

متوقع ہے سی پیک کے تحت نو خصوصی اقتصادی زون قائم کیے جارہے ہیں پشاور تا کراچی 1872

کلومیٹر ریلوے ٹریک کو اپ گریڈ اور دو رویہ کرنے کا ایم ایل ون منصوبہ سے 174000 نوکریاں

پیدا ہونے کا امکان ہے انہوں نے کہا کہ کامیاب نوجوان پروگرام کے تحت لون دیئے جارہے ہیں جو

اپنا کاروبار شروع کر سکیں اور خود دوسروں کو نوکریاں دیں اب سرکاری نوکریوں پر پابندی کو

ختم کر دیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ ملتان سکھر موٹر وے 392 کلومیٹر سی پیک کے تحت بنایا گیا

ہے جس پر 2.92 ارب امریکی ڈالر روپے کی لاگت آئی ہے۔

پاکستان میں مہنگائی کم

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں