بھکاریوں کی یلغار 40

شہر پر گداگروں اور بھکاریوں کی یلغار،انتظامیہ خاموش تماشائی

Spread the love

بھکاریوں کی یلغار

لاہور(صرف اردو آن لائن نیوز) عیدالفطر سے قبل ہی شہر پر گداگروں اور بھکاریوں نے یلغار کر

دی، بھیک مانگنے والوں نے سڑکوں اور چوراہوں پر مورچے سنبھال لئے ، ٹریفک کا رش کم ہونے

کے باوجود آنے جانے والوں کے سامنے دست سوال دراز کرنے کا سلسلہ جاری ہے جبکہ انتظامیہ

خاموش تماشائی ہے۔ تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے کورونا ایس او پیز اور لاک ڈاؤن پر

عملدرآمد کے لئے سخت احکامات جاری کئے گئے ہیں جس میں شہریوں کی زندگی محدود ہو کر رہ

گئی مگر بھکاری سڑکوں ، چوراہوں پربراجمان ہیں۔ ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے

عیدالفطر سے قبل شہر سے بھکاری کا مکمل خاتمہ کرنے کے تمام تر دعوے ہوا ہو چکے ہیں۔ شہر

میں چند ایک کارروائیوں کے دوران چند بھکاریوں کو پکڑا بھی گیا مگر چند گھنٹوں کے بعد ہی مک

مکا کر کے چھوڑ دیا گیا۔گداگروں اور بھکاریوں نے تمام تر ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی

کارروائیوں کو نظر کرتے ہوئے شہر پر یلغار کر رکھی ہے اور شہر کی سڑکوں ، چوراہوں پر

کورونا ایس او پیز کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے مورچے سنبھالے ہوئے ہیں۔ لاک ڈاؤن کے دوران

شہریوں کی آمد و رفت تو محدود کر دی گئی ہے مگر ان گداگروں اور بھکاریوں کو کیوں کھلا چھوڑ

دیا گیا ہے۔ ان کے خلاف ایکشن کیوں نہیں لیا جاتا، لگتا ہے ان بھکاریوں اور ان کے گروہوں کے

سرغنوں کا ضلعی انتظامیہ اور پولیس والوں کے ساتھ گٹھ جوڑ ہے جس کی وجہ سے انہیں کوئی نہیں

پوچھتا۔ گداگروں اور بھکاریوں کو ایس او پیز کا خیال ہے نہ ماسک کا استعمال ، پھر بھی ان کے

خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جا تی۔ اس میں ضلعی انتظامیہ کو سخت ایکشن لینا چاہیے۔ ڈپٹی کمشنر

لاہور مدثر ریاض کا کہنا ہے کہ بھکاریوں کے خلاف کارروائیاں جاری ہیں او رکوشش ہے کہ

عیدالفطر پر شہر کو بھکاریوں سے پاک کیا جائے۔ دوسری جانب ڈی آئی جی آپریشن ساجد کیانی کا

کہنا ہے کہ سڑکوں او چوراہوں سے گداروں کے خاتمے کے لئے متعلقہ تھانوں کے ایس ایچ اوز اور

دیگر پولیس افسران کو سخت احکامات جاری کررکھے ہیں اور اب تک کی کارروائیوں کے دوران

شہر کے مختلف پوائنٹس سے کئی بھکاریوں اور گداگروں کو حراست میں لیا گیا ہے اور عید الفطر

کے موقع پر ان بھکاریوں اور گداگروں کے خلاف گھیرا مزید سخت کیا جائے گا۔

بھکاریوں کی یلغار

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں