کورونا تیسری لہر تشویشناک 33

کورونا سے مزید 108 افراد جاں بحق ، 4198 نئے مریض رپورٹ

Spread the love

کورونا سے مزید

اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) کورونا وائرس سے 108 افراد جاں بحق ہوگئے، جس کے بعد

اموات کی تعداد 18 ہزار 537 ہوگئی۔ پاکستان میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 8 لاکھ 45

ہزار 833 ہوگئی۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق گذشتہ 24

گھنٹوں کے دوران 4 ہزار 198 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، پنجاب میں 3 لاکھ 12 ہزار 522، سندھ میں

2 لاکھ 88 ہزار 680، خیبر پختونخوا میں ایک لاکھ 21 ہزار 728، بلوچستان میں 22 ہزار 900،

گلگت بلتستان میں 5 ہزار 355، اسلام آباد میں 77 ہزار 65 جبکہ آزاد کشمیر میں 17 ہزار 583 کیسز

رپورٹ ہوئے۔ملک بھر میں اب تک ایک کروڑ 20 لاکھ 56 ہزار 986 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے،

گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 46 ہزار 467 نئے ٹیسٹ کئے گئے، اب تک 7 لاکھ 43 ہزار 124

مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ 5 ہزار 624 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔پاکستان میں

کورونا سے ایک دن میں 108 افراد جاں بحق ہوئے جس کے بعد وائرس سے مرنے والوں کی تعداد

18 ہزار 537 ہوگئی۔ پنجاب میں 8 ہزار 809، سندھ میں 4 ہزار 691، خیبر پختونخوا میں 3 ہزار

497، اسلام آباد میں 699، بلوچستان میں 240، گلگت بلتستان میں 107 اور ا?زاد کشمیر میں 494

مریض جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ پشاور میں پاک فوج اور پولیس نے ایس او پیز کی خلاف ورزی پر

متعدد دکانوں کو سیل کرتے ہوئے 76 افراد کو گرفتارکرلیا۔انتظامیہ کے مطابق کوہاٹ روڈ، رنگ

روڈ، قصہ خوانی اور اندرون شہر بازاروں کا معائنہ کیا گیا۔ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر 35

دکانوں کو سیل جبکہ 76 افراد کو ماسک استعمال نہ کرنے پر گرفتار کیا گیا۔ انتظامیہ کے مطابق

چمکنی کے علاقے میں ایک نجی سکول کو بھی سیل کیا گیا ہے جہاں پابندی کے باوجود طلباء کو

روزانہ بلایا جا رہا تھا۔ وفاقی دارالحکومت میں لاک ڈاون کے احکامات جاری کر دیئے گئے، مری

اور پیر سوہاوہ جانے والے راستوں کو بھی بند کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ضلعی انتظامیہ کی جانب

سے جاری کئے گئے نوٹیفیکشن کے مطابق گروسری بیکری اور مٹھائی کی دکانیں صرف شام 6

بجے تک کھلیں گی جبکہ تندور دودھ دہی کی دکانیں، ٹیک اووے چوبیس گھنٹے کھلنے کی اجازت ہو

گی۔ عید تک سستا بازار کھلے رہیں گے۔ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کے مطابق کورونا وائرس کے پیش

نظر 8 مئی سے 16 مئی 2021 تک تمام سیاحتی مقامات بند ہونگے۔ تمام ہوٹلز، ریسٹورانٹس، گیسٹ

ہاوسز، ٹرانسپورٹ، تجارتی مراکز کو بھی بند کیا جائے گا۔ مری اور پیر سوہاوہ جانے والے راستوں

کو بھی بند کیا جائے گا۔ پنجاب میں 8سے16 مئی تک مری اور پنجاب کے دیگر سیاحتی مقامات بند

رہیں گے۔ وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے شہریوں سے اپیل ہے کہ وہ مری یا دیگر مقامات کا رخ

نہ کریں۔ انہوں نے کہا سیاحتی مقامات کو عوام کی زندگیوں کے تحفظ کیلئے بند کرنے کا فیصلہ کیا

ہے۔ شہری ذمہ داری کا مظاہرہ کریں اور حکومت کے فیصلے پر عمل کریں۔ مزید براں لاہور،

راولپنڈی اور ملتان سمیت پنجاب بھر میں آٹھ مئی سے مکمل لاک ڈاون ہوگا۔ صوبے میں ہر قسم کی

پبلک ٹرانسپورٹ بھی بند رہے گی۔ شہروں کے داخلی اور خارجی راستوں پرچیک پوسٹیں قائم کی

جائیں گی، جہاں پولیس کے ساتھ رینجرز اور فوج کے جوان تعینات ہوں گے۔ سندھ حکومت نے بھی

صوبے کے تمام سیاحتی مقامات ایک ہفتے کیلیے بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت کی جانب سے

جاری نوٹیفیکیشن کے مطابق آٹھ مئی سے پندرہ مئی تک بند رہیں گے۔

کورونا سے مزید

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں