36

بھارت اوچھے ہتھکنڈوں کے باوجود کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو دبا نہیں سکاہے، آغا سید حسن

Spread the love

بھارت اوچھے ہتھکنڈوں

سرینگر (صرف اردو آن لائن نیوز) بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموںوکشمیر میں کل جماعتی

حریت کانفرنس کے سینئر رہنما اور انجمن شرعی شیعیان کے صدر آغا سید حسن الموسوی الصفوی

نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر بھارت اور پاکستان کے درمیان کوئی سرحدی تنازعہ نہیں بلکہ کروڑوں

کشمیریوں کے سیاسی مستقبل کا معاملہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت اپنے تمام تر اوچھے ہتھکنڈوں

اور جبر واستبداد کے باجود کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو دبا نہیں سکا ہے اور وہ اپنی جدوجہد عزم

وہمت کے ساتھ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق آغا سید حسن الموسوی

الصفوی نے سرینگرمیں ایک میڈیا انٹریو میں کہا کہ بھارت شروع دن سے مسئلہ کشمیر کی متنازعہ

حیثیت اور تاریخی حقائق کو تبدیل کرنے کی کوششیں کرتا چلا آرہا ہے ا۔انہوں نے کہا کہ 5اگست

2019کو بھارتیہ جنتاپارٹی کی فرقہ پرست بھارتی حکومت نے مقبوضہ جموںوکشمیر کی خصوصی

حیثیت ختم کی اور اسے تقسیم کر کے نئی دلی کے زیر انتظامیہ دو علاقوں میں تقسیم کر دیا ۔ انہوں

نے کہا کہ مودی حکومت کا یہ اقدام کشمیریوں کے جذبہ آزادی کے آگے بے بسی کا واضح اظہار تھا۔

آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے کہا کہ مودی حکومت نے اپنے اس غیر قانونی اور یکطرفہ اقدام

کے خلاف کشمیریوں کے رد عمل کو روکنے کیلئے مقبوضہ علاقے کی ہر گلی او ر کوچے میں

فوجی تعینات کیے اور حریت رہنمائوں اور کارکنوں کو گرفتار لیا۔ آغاسید حسن نے کہا کہ انہیں بھی

متواتر چودہ ماہ نظر بند رکھ کر مذہبی فرائض کی بجاآوری سے محروم رکھا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ

مودی حکومت کے اس طرح کے جابرانہ اور یکطرفہ اقدمات سے مقبوضہ کشمیر کی متنازعہ حیثیت

پر کوئی فر ق نہیں پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کو مسئلہ کشمیر کا کوئی قابل قبول

حل نکالنا پڑے گا کیونکہ ایٹمی صلاحت کے حامل دوہمسایوں کے درمیان اس مسئلے کی وجہ سے

پائی جانے والی کشیدگی پورے خطے کے امن و استحکام کیلئے ایک مسلسل خطرہ ہے۔ کل جماعتی

حریت کانفرنس کے سینئر رہنما نے مزید کہا کہ گلگت بلتستاں کو پاکستان کا صوبہ بنائے جانے کے

اقدام کو 5اگست 2019کی بھارتی کارروائی کے ساتھ نہیں جوڑا جاسکتا کیونکہ پاکستا ن نے یہ اقدام

گلگت بلتسان کے عوام کے دیرینہ مطالبے اور خواہشات کے احترام میں اٹھا یا ہے۔

بھارت اوچھے ہتھکنڈوں

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں