22

کورونا کے وار جاری،مزید98افراد جاں بحق

Spread the love

کورونا کے وار جاری

لاہور ،اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) وفاقی حکومت نے تجویز دی ہے کہ مثبت کورونا کیسز

کی شرح 13 فیصد سے تجاوز ہونے پر شہروں میں مکمل لاک ڈاؤن لگا دیا جائے گا۔ فیز ٹو میں ہائی

رسک شہروں میں 7 تا 10 دن لاک ڈاؤن کی تجویز ہے۔تفصیلات کے مطابق وزیرِ اعظم عمران خان

سے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اور سربراہ نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر (این سی او سی) اسد

عمر اور معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے ملاقات کی،ملاقات کے دوران

وزیرِاعظم عمران خان کو ملک میں کورونا کی صورتحال پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ وزیرِاعظم نے

قومی رابطہ کمیٹی برائے کووروناکا اجلاس آج طلب کر لیا۔دوسری طرف ملک بھر میں کورونا

وائرس کی خوفناک صورتحال کے بعد حکومت سخت فیصلے کرنے کے لیے تیار ہو گئی ہے، این

سی او سی کا اہم اجلاس کل ہو گا۔ وفاق نے پابندیاں سخت کرنے کے بارے میں تجاویز صوبوں کو

بھجوا دی ہیں اور صوبوں سے رائے طلب کر لی ہے۔ وفاقی حکومت کی کورونا پابندیاں دو مراحل

میں سخت کرنے کی تجویز ہے، پہلے فیز میں شام 6 تا سحری کاروباری سرگرمیاں بند کرنے کی

تجویز ہے۔، شام کے اوقات میں صرف پٹرول پمپس، ویکسی نیشن سنٹرز، فارمیسز کھلی رکھنے کی

تجویز ہے۔ ہفتہ ،اتوار کاروباری سرگرمیاں مکمل بند کرنے کی تجویز ہے۔ دفاتر میں 50 فیصد عملے

کی حاضری کے فیصلے پر سختی سے عملدرآمد کی تجویز ہے۔، متعلقہ وزارت، محکمہ، بینک کے

سربراہ عملدرآمد کے جوابدہ ہونگے، وفاقی حکومت کی دفاتر کے اوقات کار صبح 9 سے دوپہر 2

بجے کرنے کی تجویز ہے۔فیز ون کے دوران کورونا کا پھیلاؤ نہ رکنے پر لاک ڈاؤن کے نفاذ کی

تجویز ہے۔ مثبت کورونا کیسز کی شرح 13 فیصد سے تجاوز پر شہروں میں مکمل لاک ڈاؤن نفاذ کی

تجویز ہے۔ فیز ٹو میں ہائی رسک شہروں میں 7 تا 10 دن لاک ڈاؤن کی تجویز ہے۔دریں اثناوفاقی

دارالحکومت میں بھی کورونا کی صورتحال انتہائی تشویشناک صورتحال اختیار کر گئی۔ کورونا

مریضوں کیلئے بیڈز اور وینٹی لیٹرز کی تعداد 50 فیصد سے کم رہ گئی ہے۔۔ کیسز میں مسلسل

اضافے سے ہیلتھ سسٹم پر دباؤ بڑھ گیا ہے۔ ضلع انتظامیہ نے عوام کو ایس او پیز پر سختی سے

عملدرآمد کا کہتے ہوئے خبردار کر دیا ہے۔این سی او سی کے مطابق ملک بھر میں کورونا وائرس

سے مزید 98 افراد جاں بحق ہو نے کے بعد اموات کی تعداد 16 ہزار 698 ہوگئی،پاکستان میں کورونا

کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 7 لاکھ 78 ہزار 238 ہوگئی۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ

ترین اعدادوشمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 5 ہزار 857 نئے کیسز رپورٹ ہوئے،

پنجاب میں 2 لاکھ 79 ہزار 437، سندھ میں 2 لاکھ 75 ہزار 81، خیبر پختونخوا میں ایک لاکھ 9 ہزار

704، بلوچستان میں 21 ہزار 242، گلگت بلتستان میں 5 ہزار 215، اسلام آباد میں 71 ہزار 533

جبکہ آزاد کشمیر میں 16 ہزار 26 کیسز رپورٹ ہوئے۔ ملک بھر میں اب تک ایک کروڑ 13 لاکھ 77

ہزار 423 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 57 ہزار 591 نئے ٹیسٹ کئے

گئے، اب تک 6 لاکھ 76 ہزار 605 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ 4 ہزار 593 مریضوں کی

حالت تشویشناک ہے۔ پاکستان میں کورونا سے ایک دن میں 98 افراد جاں بحق ہوئے جس کے بعد

وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 16 ہزار 698 ہوگئی۔ پنجاب میں 7 ہزار 718، سندھ میں 4 ہزار

562، خیبر پختونخوا میں 2 ہزار 990، اسلام آباد میں 649، بلوچستان میں 226، گلگت بلتستان میں

104 اور آزاد کشمیر میں 449 مریض جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔کورونا کی تیسری لہر کی شدت کے

باعث خیبرپختونخوا اور پنجاب کے اسپتالوں پر دبا بڑھنے لگا۔ مردان میں کورونا مریضوں کے تمام

وینٹی لیٹرزبھرگئے ہیں جب کہ گوجرانوالہ میں 88 فیصد، ملتان میں 85 فیصد اور لاہور میں 82

فیصد وینٹی لیٹرز زیر استعمال ہیں۔ دوسری جانب گوجرانوالہ میں 85 فیصد، پشاور میں 74، نوشہرہ

اور صوابی میں 67،67 فیصد آکسیجن بیڈ زیراستعمال ہیں۔ متاثرہ علاقوں میں آنے اور جانے والے

تمام افراد کے لیے ماسک پہننا لازمی قرار، لوگوں کی غیر ضروری نقل و حرکت پر پابندی

ہوگیکراچی کے ضلع وسطی کے تین ٹاونز کی مختلف گلیوں میں مائیکرو اسمارٹ لاک ڈاون لگادیا گیا

جو 5 مئی تک نافذ رہے گا۔ اس حوالے سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق مائیکرو اسمارٹ لاک ڈاون

گلبرک، نارتھ کراچی اور نارتھ ناظم آباد کے علاقوں میں لگایا گیا ہے جس کا اطلاق 21 اپریل سے 5

مئی تک ہوگا۔ نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ تینوں ٹاونز کے متاثرہ علاقوں میں 13کورونا کے مریض

موجود ہیں، متاثرہ علاقوں میں آنے اور جانے والے تمام افراد کے لیے ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا

ہے جب کہ متاثرہ علاقوں کے لوگوں کی غیر ضروری نقل و حرکت پر پابندی ہوگی وزیر صحت

پنجاب ڈاکٹریاسمین راشدنے 60سال عمر سے زائدمعذوریابیمار بزرگ شہریوں کیلئے بڑااقدام اٹھانے

کا اعلان کیا ہے۔صوبائی وزیر صحت نے کہاکہ آئندہ60سال عمرسے زائدمعذوریابیمار بزرگ شہریوں

کو گھروں میں کوروناویکسین لگائی جائے گی۔60سال عمرسے زائدمعذوریابیمار بزرگ شہری

1033پرکال کرکے معلومات فراہم کریں۔صوبائی وزیر صحت نے مزیدکہاکہ60سال عمرسے

زائدمعذوریابیمار بزرگ شہریوں کوایمبولیسنزکے ذریعے گھروں میں ویکسین لگائی جائے گی۔

ایمبولینس میں ایک ویکسینیٹراور ڈاکٹرتعینات ہوگا۔

کورونا کے وار جاری

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں