سعد رضوی کارکنان اپیل 30

کالعدم تحریک لبیک اور حکومت کے درمیان مذاکرات

Spread the love

لاہور (صرف اردو آن لائن نیوز) تحریک لبیک حکومت مذاکرات

کالعدم تحریک لبیک اور حکومت کے درمیان مذاکرات کا تیسرا راؤنڈ رات دس بجے شروع ہوا۔

مذاکرات میں صاحبزادہ حامد رضا ، وفاقی وزیر اطلاعات شیخ رشید اور وفاقی وزیر مذہبی امور پیر

نورالحق قادری بھی شریک ہوئے اس سے قبل مذٓکرات کے دوسرے دور میں گورنر پنجاب چودھری

سرور اور وزیر قانون راجہ بشارت نے حکومت کی نمائندگی کی۔ مذاکرات کے دوسرے دور حکومتی

وفد نے کالعدم تحریک لبیک کے سربراہ حافظ سعد رضوی سے مطالبہ کیا وہ ایک ویڈیو بیان کے

ذریعے دھرنا ختم کرنے اور 20اپریل کی کال واپس لینے کا اعلان کریں وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید

نے کہا ہے کہ حکومت اور کالعدم ٹی ایل پی میں میں بات چیت چل پڑی ہے، امید ہے کالعدم ٹی ایل پی

سے تمام معاملات طے پا جائیں گے۔دوسری طرف راولپنڈی میں لال حویلی کے باہر ہزاروں شہریوں

نے احتجاج کرتے ہوئے وزیر داخلہ شیخ رشید کے خلاف نعرے بازی کی اور لال حویلی کا گھیراؤ کر

لیا تاہم پولیس اور رینجرز کے ساتھ مذاکرات کے بعد مظاہرین منتشر ہو گئا۔ دریں اثنا لاہور میں ڈی

ایس پی نواں کوٹ اور پولیس اہلکاروں کے اغوا کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ مقدمہ دہشت گردی کی

دفعات کے تحت درج کیا گیا ہے۔مقدمہ تھانہ نواں کوٹ میں اے ایس آئی محمد اقبال کی مدعیت میں

دہشت گردی کی دفعات کے تحت درج کیا گیا ہے۔ ایف آئی آر کے متن کے مطابق مشتعل مظاہرین نے

تھانے میں گھس کر توڑ پھوڑ کی، مظاہرین کے پاس پٹرول بم اور تیزاب کی بوتلیں تھی۔ مظاہرین نے

تھانے میں گھس کر آگ لگا دی اور ڈی ایس پی کو اہلکاروں سمیت اغوا کر لیا۔ایف آئی آر کے متن میں

مزید کہا گیا ہے کہ 300 کارکن جو اسلحہ اور ڈنڈوں سے لیس تھے سی آئی اے میں جانے اور

رینجرز پر حملہ آور ہوئے۔

تحریک لبیک حکومت مذاکرات

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں