کورنا مریض آخری لمحات 22

بھارتی ریاست اتر پردیش میں کرونا کے پھیلا کی صورت حال بد تر ہو گئی

Spread the love

اتر پردیش میں کرونا

لکھنو(صرف اردو آن لائن نیوز) بھارتی ریاست اتر پردیش میں کرونا کے پھیلا کی صورت حال بد تر

ہو گئی ہے، اسپتال مریضوں سے بھر گئے، کرونا میں مبتلا ایک معمر مریض آکسیجن سلنڈر کے ساتھ

ایک سے دوسرے اسپتال جاتا رہا لیکن کوئی جگہ نہ ملی۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی شہر لکھن میں

رونگٹے کھڑے کر دینے والا واقعہ پیش آیا، ایک بیٹا کرونا انفیکشن سے متاثرہ 70 سالہ والد کو

آکسیجن سلنڈر کے ساتھ لیے اسپتال اسپتال پھرتا رہا لیکن انھیں کسی اسپتال نے داخل نہیں کیا۔ رپورٹس

کے مطابق کسی اسپتال میں جگہ نہ ملنے کے بعد علی گنج کے رہائشی سشیل کمار کو ان کا بیٹا واپس

گھر لے آیا، جہاں وہ خود والد کی تیمار داری کر رہا ہے۔ سشیل کمار ذیابیطس اور بلڈ پریشر کے بھی

مریض ہیں، بدھ کو انھیں اچانک سانس لینے میں مشکل پیش آنے لگی، مقامی اسپتال لے جائے جانے

پر ڈاکٹرز نے کرونا ٹیسٹ کے بغیر انھیں دیکھنے سے انکار کر دیا، جب کہ ان کا آکسیجن لیول گر رہا

تھا، جب ٹیسٹ ہوا تو وہ کرونا پازیٹو نکلے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق جس اسپتال میں مریض کا

ریگولر علاج ہو رہا تھا، اس نے بزرگ شہری کو داخل کرنے سے انکار کردیا کہ کوئی بستر خالی نہیں

ہے، جس پر بیٹا آکسیجن سلنڈر کار میں رکھ کر انھیں شہر کے دیگر اسپتالوں پر گھمانے لگا، لیکن

کہیں جگہ نہ ملی۔ سشیل کمارے کے بیٹے نے فون پر بھی کئی ڈاکٹرز سے منتیں کیں لیکن کوئی مدد نہ

ملی، والد کو اسپتال در اسپتال گھمانے کے دوران آکسیجن سلنڈر بھی ختم ہونے لگا، جس پر اسے ایک

آکسیجن سینٹر سے مہنگے داموں آکسیجن سلنڈر بھی خریدنا پڑا۔ کرونا مریض کے بیٹے اشیش کا کہنا

تھا کہ وہ اب گھر پر ہی والد کی دیکھ بھال کر رہا ہے، اور اس واقعے نے ان کی پوری فیملی کو

صدمے سے دوچار کر دیا ہے۔

اتر پردیش میں کرونا

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں