آسٹرازینکا کا استعمال 42

ویکسین آسٹرازینکا کا استعمال نہ روکیں، ڈبلیو ایچ اوکی اپیل

Spread the love

آسٹرازینکا کا استعمال

نیویارک(صرف اردو آن لائن نیوز) عالمی ادارہ صحت نے کہاہے کہ آکسفورڈ کی بنائی گئی کورونا ویکسین آسٹرازینکا کے استعمال نہ روکیں۔غیرملکی خبررساں

ادارے کے مطابق ڈبلیو ایچ او کا کہنا تھا کہ ویکسین کے استعمال سے خون میں پھٹکیاں بننے کے کوئی ثبوت نہیں ہے ۔واضح رہے کہ ناروے میں ایسٹرا زینیکا

کیاستعمال پرخون کی پھٹکیاں بننے کے واقعات کے بعد آئرلینڈ نے ویکسین کا استعمال روک دیا تھا، ڈنمارک، آئس لینڈ اور اٹلی بھی ویکسین کا استعمال عارضی

طور پر روک چکے ہیں۔خون کی پھٹکیاں بننے کے واقعات 30لاکھ میں سے

22افراد میں سامنے آئے تھے۔

پرتگال نے بھی کورونا ویکسین ایسٹرازینیکا کا استعمال عارضی طور پر روک دیا

پرتگال نے بھی کورونا ویکسین ایسٹرازینیکا کا استعمال عارضی

طور پر روک دیا۔میڈیارپورٹس کے مطابق اس سے پہلے جرمنی، فرانس، اٹلی، ناروے، آئرلینڈ اور اسپین نے اسٹرازینیکا ویکسین کا استعمال روک دیا تھا۔ یورپین

میڈیسن ایجنسی تمام صورتحال کا جمعرات کو جائزہ لے گی۔دوسری جانب ڈنمارک، آئس لینڈ اور اٹلی بھی ویکسین کا استعمال عارضی طور پر روک چکے

ہیں۔ خون کی پھٹکیاں بننے کے واقعات 30 لاکھ میں سے 22 افراد میں سامنے آئے تھے۔ادھر عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ آکسفورڈ کی بنائی گئی کورونا

ویکسین ایسٹرازینیکا کے استعمال نہ روکیں، کیونکہ ویکسین کے استعمال سے

خون میں پھٹکیاں بننے کے کوئی ثبوت نہیں ہیں۔

آسٹرازینکا کا استعمال

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں