میانمار میں فوجی حکومت 24

میانمار میں فوجی حکومت نے مظاہرین کو احتجاج نہ کرنے کی دھمکی دیدی

Spread the love

ینگون (صرف اردو آن لائن نیوز) میانمار میں فوجی حکومت

میانمار میں حکومت کا تختہ الٹنے اور آنگ سان سوچی کی رہائی کیلئے احتجاج

کرنے والوں کو فوجی حکومت نے مزید احتجاج کرنے سے روک دیا۔تفصیلات کے

مطابق میانمار میں حکومت کا تختہ الٹنے اور آنگ سان سوچی کی رہائی کیلئے

احتجاج کرنیوالوں کو فوجی حکومت نے مزید احتجاج کرنے سے روک دیاہے۔

سیکیورٹی حکام ابھی تک عوام کے خلاف طاقت کے بدترین استعمال سے باز رہے

ہیں لیکن پولیس نے بعض مقامات پر بڑھتے دباؤ کو کم کرنے خصوصاً نیپی دوو

میں نیشنل ہائی وے پر مشتعل مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پانی کی توپوں

اور آنسو گیس کا استعمال کیا۔ملک بھر میں فوجی بغاوت کی بڑھتی ہوئی مخالفت

اور مظاہروں پر سرکاری ٹی وی نے مظاہرین کیخلاف کریک ڈاؤن کا عندیہ دیتے

ہوئے خبردار کیا کہ فوجی حکمرانی کی مخالفت غیرقانونی ہے۔ٹی وی پر اینکر

نے حکومتی فرمان پڑھتے ہوئے کہا کہ جو کوئی بھی ریاست کے استحکام، عوام

کی حفاظت اور قانون کی حکمرانی کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرے گا تو اس

کے خلاف قانون کے مطابق مؤثر کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

میانمار میں فوجی حکومت

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں