غیر تصدیق شدہ کٹس 28

اٹھارہویں ترمیم کے بعد مسائل کے حل کا اختیار وفاق کے پاس نہیں، فواد چوہدری

Spread the love

اٹھارہویں ترمیم کے

اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد

چوہدری نے کہا ہے کہ جتنا نقصان نواز شریف نے پنجاب کو پہنچایا کسی نے نہیں پہنچایا، تیسری بار وزیر اعظم کی ترمیم ختم کرنے کے نتیجے میں نواز شریف

نے پنجاب کی پیٹھ میں خنجر گھونپا، ملک میں اصلاحات کی ضرورت ہے ، وفاق نے سندھ حکومت کو 16 ارب روپے دیے ، ایسا کوئی میکینزم ہی نہیں کہ پتہ چل

سکے وفاق سے جانے والا پیسہ استعمال بھی ہورہا ہے یا نہیں۔عدالت کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیرِ سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا

کہ اٹھارہویں ترمیم کے بعد مسائل کے حل کا اختیار وفاق کے پاس نہیں ہے ، حکومت اور اپوزیشن کے درمیان بڑی تلخیاں ہیں، اتنی تلخیوں میں مذاکرات نہیں

ہوتے، اپوزیشن کو دیوار سے لگانے کا حکومت کا موقف نہیں ہونا چاہیے۔فوادچوہدری نے کہا کہ گزشتہ ورز بڑے لوگوں کے خواب چکنا چور ہوئے

ہیں،میں تو پہلے ہی کہہ رہا تھا کہ سب لوگ اپنی اپنی تنخواہوں پر کام کریں گے، ہمیں سیاسی شعور کی ضرورت ہے، ہمیں الیکشن کے سسٹم میں اصلاحات

چاہییں،عدالتی تقرری اور گورننس کے سسٹم میں بھی اصلاحات چاہئیں۔وفاقی وزیر نے کہا کہ 18ویں ترمیم میں اچھی چیزیں بھی ہیں، مشرف نے صوبوں سے

اختیارات لے کر لوکل گورنمنٹ کو دے دیے، صوبائی حکومت کی صلاحیت نہیں ہے کہ ڈیلیور کرسکے، سیاست دانوں کو شہریوں کے فائدے کے بارے میں سوچنا

چاہیے، میں بار ایسوسی ایشن اور وکلاء کو کہتاہوں معاشرے کی خرابیوں کی نشاندہی کریں۔انہوں نے کہاکہ بھارت میں کسان احتجاج سے متعلق بات کرتے

ہوئے کہا کہ بھارتی کسان حق اور سچ کیلئے کھڑے ہیں، اگر ہمارے کہنے پر بھارت میں کسان باہر نکل آئے ہیں تو بھارت کو تو پاکستان سیبچ کر رہنا

چاہیے،مودی سرکار جو کررہی ہے وہ پاکستان کیلئے نہیں پوری دنیا کیلئے خطرہ ہے۔فوادچوہدری نے کہاکہ اب بلاول اور مریم مل کر حکومت کو بددعائوں کی مہم

شروع کریں گے، حکومت کو ہمیشہ اپوزیشن کو راستہ دینا چاہیے،18ویں ترمیم کے بعد وفاق کیلئے جو مسائل پیدا ہوئے ان پر بحث ہی کہیں نہیں،اسپتالوں،

اسکولوں کے مسائل اب صوبائی معاملات ہوچکے ہیں۔وفاقی حکومت سے سندھ کو 2سال میں 16سو ارب منتقل ہوئے،پنجاب،کے پی اور بلوچستان کو بھی رقوم

منتقل ہوئیں،اب انڈے، دودھ مہنگیہیں تو یہ کس نے کنٹرول کرنا ہے، وزیراعظم کے پاس اختیار ہی نہیں۔انہوں نے کہاکہ سندھ کے وزیراعلیٰ کہتے ہیں وہ

وزیراعظم کو جوابدہ ہی نہیں،جب وزیراعلیٰ وزیراعظم کو جوابدہ نہیں تو وفاق کیسے چلے گا؟فواد چوہدری نے کہاکہ گندم،پانی کی سبسڈی صرف پنجاب برداشت

کررہا ہے،نوازشریف نے اٹھارہویں ترمیم پر صرف تیسری باروزیراعظم بننے کے لئے دستخط کئے، نواز شریف نے صرف اس مقصد کے لئے پنجاب کی پیٹھ

میں خنجر گھونپ دیا،بری گورننس کی ذمہ داری آج وفاق پر نہیں صوبوں پر ہے، عام شہری کو کیسے فائدہ پہنچانا ہے یہ سوچنا چاہیے۔وفاقی وزیر نے کہاکہ گزشتہ

روز 31 جنوری تھی لوگوں کا خیال تھا انقلاب آجائے گا، میں نے پہلے ہی کہا تھا یہ پرانی تنخواہ پر کام کریں گے، ہم کب تک حکومتیں بنانے اور گرانے میں لگے

رہیں گے۔

اٹھارہویں ترمیم کے

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں