67

کپوارہ قتل عام کے شہداء کی یاد میں قصبے میں مکمل ہڑتال

Spread the love

سرینگر(صرف اردو آن لائن نیوز) کپوارہ قتل عام ہڑتال

غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں1994 میں بھارتی

فوجیوں کے ہاتھوںکپوارہ میں ہلاکت خیز قتل عام کے شہداء کی یاد میںبدھ کو

کپوارہ قصبے میں مکمل ہڑتال کی گئی۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق قصبے میں

تمام دکانیں اور دیگر کاروباری ادارے بندرہے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک معطل رہی۔دریں اثناء لوگ صبح کے وقت مختلف گروپوںمیں مزار شہداء پہنچے اور قتل عام

کے شہداء سمیت تمام شہدائے کشمیر کے لئے خصوصی دعا کی۔بھارتی فوجیوں

نے 26 جنوری1994ء کو بھارتی یوم جمہوریہ کے موقع پر مکمل ہڑتال کرنے پر

لوگوں کو سزا دینے کے لئے اگلے روز27 بے گناہ کشمیریوں کو اندھادھند

فائرنگ کرکے بے رحمی سے شہیدکیا تھا۔ کپوارہ قتل عام کے شہداء کے لواحقین

27 سال گزر جانے کے باوجود انصاف سے محروم ہیں۔مقامی لوگوں نے اس وقت

صحافیوں اور تحقیقاتی اداروں کو بتایا تھا کہ قتل عام سے ایک روز قبل بھارتی

فوج کے افسر نے مقامی دکانداروں سے کہا تھا کہ وہ ہڑتال نہ کریں اور فوجی

کیمپ میں یوم جمہوریہ کی تقریب میں شرکت کریں۔ تاہم دکانداروں نے مکمل ہڑتال

کی اورتقریب میں شرکت بھی نہیں کی۔ اگلے دن جب وہ اپنی دکانیں کھول رہے

تھے تو بھارتی فوجی گاڑیوں میں آئے اور ان پر اندھا دھندفائرنگ کی جس کے

نتیجے میں 27 افرادشہید اور متعدد زخمی ہوگئے تھے۔

کپوارہ قتل عام ہڑتال

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں