35

31 جنوری کو استعفیٰ نہیں ٹھینگا ملے گا، شیخ رشید احمد

Spread the love

استعفیٰ نہیں ٹھینگا ملے

اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز) وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے

کہ اپوزیشن جو مرضی کرلے اسے 31 جنوری کو استعفیٰ نہیں ٹھینگا ملے گا۔ایک

انٹرویومیں انہوںنے کہاکہ اس وقت مسلم لیگ (ن) اور مولانا فضل الرحمٰن کا نام

اپوزیشن ہے، پیپلز پارٹی جو مرضی کہتی رہے تاہم میں اسے اپوزیشن میں نہیں

گنتا، یہ لانگ مارچ کریں گے اور جس طرح کا سلوک یہ کریں گے اس طرح کا ہم

کریں گے۔انہوں نے کہا کہ یہ اپنی طاقت دیکھ کر فیصلہ کریں گے لیکن اگر یہ

سمجھ رہے ہیں کہ انہیں 31 جنوری کو استعفیٰ ملے گا تو استعفیٰ نہیں ٹھینگا ملے

گا۔براڈ شیٹ انکوائری کمیٹی کے حوالے سے شیخ رشید نے کہا کہ انہوں نے کہا

کہ اپوزیشن نے ججز کو بھی متنازع بنایا ہے، اداروں کو بھی متنازع بنایا ہے، اس

کمیٹی نے تو صرف رپورٹ پیش کرنی ہے، اپوزیشن اگر لانگ مارچ کرنا چاہتی

ہے تو فیصلہ کرے تاکہ ہم ان کیلئے بہتر انتظامات کر سکیں۔ان کا کہنا تھا کہ

براڈشیٹ معاملے میں پرویز مشرف سے بھی باز پرس کرنی چاہیے، ان کی طبیعت

کافی ناساز ہے لیکن باز پرس میں کوئی حرج نہیں ہے۔ایک سوال پر وزیر داخلہ

نے کہا کہ چوہدریوں پر اس وقت کوئی بات نہیں بن رہی تھی، اب بھی نہیں بن رہی

اس لیے کیسز ختم کیے گئے ہوں گے۔براڈشیٹ کا معاملہ پارلیمنٹ میں بھیجنے کے

حوالے سے انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کا تو اجلاس ہی نہیں ہوتا اور ہوتا ہے تو

لڑائی جھگڑے ہوتے ہیں، موجودہ پارلیمنٹ کی کارکردگی کافی کمزور ہے اور

قانونی معاملات میں بہت کم دلچسپی ہے۔وزیر داخلہ نے کہا کہ جب تک یہ کیس

زندہ رہے گا یہ نتیجہ خیز نکلے گا، جہاں بدبو ہو وہاں اسپرے کرنا چاہیے اور

نظام کے بدبودار کیڑے مکوڑوں کا خاتمہ ہونا چاہیے، لیکن اس عمر تک میں نے ان بدبودار کیڑوں کا خاتمہ ہوتے نہیں دیکھا، بڑے لوگوں سے تو اب تک

10 روپے بھی وصول نہیں ہوئے لیکن عمران خان نے ہمت نہیں ہاری ہے۔نیب

سے متعلق انہوں نے کہا کہ نیب ایک آزاد ادارہ ہے اور میں سمجھتا ہوں کہ

چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال زیادہ آزادی سے فیصلے کریں گے اور

احتساب کے عمل کو زیادہ بہتر انداز میں آگے بڑھائیں گے، تاہم احتساب یکطرفہ

نہیں ہونا چاہیے، جس جس نے گاجریں کھائی ہیں اسے ضرور پھکی ملنی چاہیے۔

پرویز مشرف کے این آر او کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اس این آر او کی سزا

پوری قوم بھگت رہی ہے اور وہ خود بھی سزا بھگت رہے ہیں جبکہ اس سے پورا

نظام جل رہا ہے۔شیخ رشید نے کہا کہ ‘شفاف احتساب کے معاملے میں وزیر اعظم

عمران خان کسی کی نہیں سنتے، کوئی تگڑی قوت نہیں ہے، نیب کیسز کی تیاری

میں وقت زیادہ لیتی ہے تو یہ اس کی صوابدید ہے۔چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو

زرداری کی جانب سے تحریک عدم اعتماد لانے کی بیان پر انہوں نے کہا کہ

اتحادی ہمارے ساتھ رہیں گے، اپوزیشن کے سنیٹ میں چیئرمین کے خلاف تحریک

عدم اعتماد پر 11 ووٹ کم ہوجاتے ہیں تو اسمبلی میں تو ان کو بڑا ڈینٹ پڑے گا،

پیپلز پارٹی کسی قیمت پر سندھ کی حکومت چھوڑنے کو تیار نہیں ہوگی کیونکہ

اسے پتہ ہے کہ اس کے اثرات کیا نکلیں گے۔وزیر داخلہ نے کہا کہ اتحادی وہیں

کھڑے ہوں گے جہاں عمران خان کھڑا ہوگا، بلکہ سینیٹ انتخابات میں مسلم لیگ

(ق) کو ایک سیٹ مل رہی ہے اور وہ پی ٹی آئی کے لیے الیکشن مہم چلانے

جارہے ہیں، ایم کیو ایم بھی ہمارے ساتھ ہے اور حکومت کو کچھ نہیں ہونے والا۔

حکومت پنجاب کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ

اگر عثمان بزدار وزیر اعلیٰ نہ ہوتے تو کون ہوتا، وہ عمران خان کا انتخاب ہیں اور

عمران خان نے یقینا سوچ سمجھ کر ان کا انتخاب کیا ہوگا۔

استعفیٰ نہیں ٹھینگا ملے

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں