48

مجھے فلموں میں کاسٹ نہ کرنے کی وجہ سمجھ نہیں آتی، عدنان صدیقی

Spread the love

وجہ سمجھ نہیں آتی

کراچی (صرف اردو آن لائن یوز) پاکستان کے معروف اداکار عدنان صدیقی نے

فلموں میں کام نہ کرنے سے متعلق کہا ہے کہ انہیں خود سمجھ نہیں آتا کہ انہیں فلم

کی آفر کیوں نہیں کی جاتی۔برطانوی نشریاتی ادارے (بی بی سی) کی اردو سروس

کو دیے گئے انٹرویو میں ایک سوال کے جواب میں عدنان صدیقی نے کہا کہ انہیں

خود نہیں سمجھ آتا کہ فلم کی آفر نہیں کی جاتی۔عدنان صدیقی نے مزاحیہ انداز میں

کہا کہ کیا میرے والدین پہلے غریب تھے اس لیے مجھے فلم میں نہیں لیتے؟ کیا

وجہ ہے مجھے خود نہیں سمجھ آتا۔اداکار کا کہنا تھا کہ انہیں فلموں میں کیمیو

(چھوٹے کرداروں) کی آفرز بہت ہوتی ہیں لیکن انہوں نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ اس

کا معاوضہ لیں گے ورنہ نہیں کریں گے۔تاہم انہوں نے خود ہی کہا کہ اب ان کی

عمر ہیرو جتنی بھی نہیں رہی اور ہر کوئی ہمایوں بھی نہیں ہو سکتا، انہوں نے

مزید کہا کہ دنیا بھر میں میری جیسی ادھیڑ عمر کے لوگ ہیرو ہی آتے ہیں،

سوائے اِدھر کے اب جو عوام کو پسند ہو۔اپنی پروڈیوس کی گئی فلم میں خود کو

کاسٹ نہ کرنے سے متعلق عدنان صدیقی نے کہا کہ وہ اس کہانی کے کردار پر

پورا نہیں اترتے کیونکہ کہانی نوجوان لڑکے اور لڑکی کی تھی۔انہوں نے مزید کہا

تھا کہ ان کی پنجابی بھی بالکل اچھی نہیں ہے، اس لیے شاید فٹ نہیں ہورہے تھے۔

انٹرویو میں سوشل میڈیا کے استعمال سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ پرانا دور

زیادہ اچھا لگتا تھا لیکن اس دور میں بھی مزہ آ رہا ہے کیونکہ سوشل میڈیا کی

صورت میں نئی چیز سیکھنے کو مل گئی ہے۔عدنان صدیقی نے بتایا کہ جب

امریکا میں کورونا وائرس اپنے عروج پر تھا تو وہ، ہمایوں سعید اور حرا مانی

امریکا میں تھے اور جب واپس آئے تو انہوں نے اور ہمایوں سعید نے آئسولیشن میں رہنے کا فیصلہ کیا تھا اور ایک ہوٹل میں رک گئے تھے جہاں انہوں نے

15 دن ایک ساتھ گزارے تھے۔

وجہ سمجھ نہیں آتی

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں