فیاض احمد علیگ ڈاکٹر 396

غزل (ڈاکٹر فیاض احمد علیگ)

Spread the love

ڈاکٹر فیاض احمد علیگ کا تعلق ہندوستان سے ہے اور علمی حلقوں میں ان کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں ہے بینا پارہ اعظم گڑھ میں بحثیت استاد اور قریب ہی بطور معالج خدمات انجام دیتے ہیں ڈاکٹر فیاض احمد علیگ ہمہ جہت شخصیت کے مالک ہیں انہیں جس قدر دسترس طب و جراحت پر ہے اسی قدر شعر و سخن میں بھی ہے، یہی نہیں وہ تحریر و تحقیق کے فن میں بھی طاق ہونے کے ساتھ ساتھ اپنا ایک منفرد نام و مقام رکھتے ہیں ہم نے اس سے قبل بھی ڈاکٹر صاحب کے متعدد فن پارے شائع کئے ہیں اور ساتھ ساتھ ان کے تحقیقی مضامین بھی شائع ہوتے رہتے ہیں ہمارے ہاں جن لوگوں کے گذشتہ برس میں سب سے زیادہ پڑھا گیا ہے ان میں پروفیسر شمیم ارشاد اعظمی اور ڈاکٹر فیاض احمد علیگ ہی ہیں۔یہ بھی لکھنا ضروری ہے کہ ان کی غیر حاضری کو ہم تو محسوس کرتے ہیں کہ یہ ہمارے بہت محسن اور اچھے دوست و مشیر ہیں ہمارے ساتھ قارئین کرام بھی یاد کرتے ہیں اور ان کے مضامین سب سے زیادہ تلاش کئے جاتے ہیں۔ ہمارے معاونین میں یہ دونوں وہ احباب ہیں جن کی تحقیق کو ابھی تک کسی نے چیلنج نہیں کیا

ڈاکٹر فیاض احمد علیگ کا یہ کلام بھی پڑھیں

عجب عالم ہے دل کی سادگی کا
ابھی تک منتظر ہے وہ اسی کا۔

جو بھی آئے کفن بر دوش آئے
یہی دستور ہے اس کی گلی کا ۔

عبث ہے یاں کسی پر ناز کرنا
بلا مطلب نہیں کوئی کسی کا ۔

اٹھائیں زندگی کے ناز کیا ہم
بھروسہ ہی نہیں جب زندگی کا

زمانے بھر کو جس نے روشنی دی
اندھیرا اب مقدر ہے اسی کا

سبھی کچھ ہے تمہارے پاس لیکن
کوئی معیار بھی ہے زندگی کا۔

تمہیں قائل نہیں فیاض ورنہ
زمانہ معترف میری خودی کا ۔

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

3 تبصرے “غزل (ڈاکٹر فیاض احمد علیگ)

  1. Assalamwalaikum , जनाब मै भी कुछ अपने रिसाले आपके मैगजीन में पब्लिश करवाना चाहता हूं। मुझे क्या करना होगा.?

    1. ڈاکٹر فرحان آپ کا بہت شکریہ میں آپ یکم جنوری سے اپنی نگارشات ارسال فرمائیں میں اس کو اپنی اشاعت میں لازم شامل کروں گا میں پاکستان سے کام کرتا ہوں اور ہندی سکرپٹ کا کی بورڈ نہ ہونے کی وجہ سے آپ کو اردو میں جواب دے رہا ہوں اور میری سائٹ صرف اردو میں ہی مضامین شایع ہوتے ہیں تھوڑی بہت ہندی پڑھ سکتا ہوں یوں کہہ لیں کہ دیوناگری سکرپٹ پڑھ تو سکتا ہوں مگر ہندی زبان سے کما حقہ آگاہ نہیں ہوں
      خیر اندیش
      مدثر بھٹی
      مدیر صرف اردو ڈاٹ کام

اپنا تبصرہ بھیجیں