جرمن سیٹلائٹ کمپنی چین 55

سکیورٹی خدشات، جرمن سیٹلائٹ کمپنی کی چین کو فروخت روک دی گئی

Spread the love

برلن(صرف اردو آن لائن نیوز) جرمن سیٹلائٹ کمپنی چین

جرمن حکومت نے قومی سلامتی کے خدشات کے باعث جرمنی کی ایک سرکردہ

ریڈار اور سیٹلائٹ کمپنی کی چین کو ممکنہ فروخت روک دی ہے۔ خریداری کی

خواہاں چینی فوج کے لیے میزائل تیار کرنے والے صنعتی گروپ کی ایک ذیلی

کمپنی تھی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایک سرکاری دستاویز سے ثابت

ہو گیا کہ جرمن حکومت نے اس جرمن ادارے کے چینی ملکیت میں چلے جانے کا

راستہ بند کر دیا ہے۔ اس اقدام کی وجہ اس جرمن خلائی اور دفاعی ٹیکنالوجی

کمپنی کے ممکنہ طور پر چین کے ہاتھوں میں جانے سے جڑے ہوئے قومی

سلامتی کے خدشات بنے۔اس جرمن کمپنی کا نام آئی ایم ایس ٹی ہے اور اسے ایک

ایسی چینی کمپنی خریدنا چاہتی تھی، جو چین کی مسلح افواج کے لیے میزائل تیار

کرنے اور ریاستی ملکیت میں کام کرنے والے چائنا ایروسپیس اینڈ انڈسٹری گروپ

کا ایک ذیلی ادارہ ہے۔برلن میں وفاقی جرمن وزارت اقتصادیات کی ایک ترجمان

نے اس بارے میں کوئی تبصرہ کرنے یا متعلقہ چینی کمپنی کا نام بتانے سے انکار

کر دیا۔ تاہم ترجمان نے بس اتنا کہا کہ وفاقی کابینہ نے بند کمرے میں ہونے والے

اپنے ایک اجلاس میں اس معاملے کا جائزہ لیا اور وزارت اقتصادیات کو یہ اختیار

دے دیا کہ وہ اس امر کا جائزہ لے کر اس ممکنہ ڈیل کو بلاک کر دے۔ساتھ ہی اس

خاتون ترجمان نے یہ بھی کہا کہ یہ غیرملکی سرمایہ کاری ایک غیر یورپی

سرمایہ کار ادارے کی طرف سے کی جانا تھی اور اس کا راستہ اس وجہ سے

روکا گیا کہ یوں جرمنی کی قومی سلامتی خطرے کا شکار ہو سکتی تھی۔

جرمن سیٹلائٹ کمپنی چین

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں